We have moved all non-book items like Speeches, Madani Pearls, Pamphlets, Catalogs etc. in "Pamphlet Library"

Book Name:Sirat ul Jinan jild 4

سورۂ ہود

سورۂ ہود کا تعارف

مقامِ نزول:

        حضرت عبداللہ بن عباس، حضرت حسن ا ور حضرت عکرمہ رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُم اور دیگر مفسرین فرماتے ہیں کہ سورۂ ہود مکہ مکرمہ میں نازل ہوئی ہے۔ حضرت عبداللہ بن عباس رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُمَا سے ایک روایت یہ بھی مروی ہے کہ آیت ’’ وَاَقِمِ الصَّلٰوۃَ طَرَفَیِ النَّہَارِ‘‘ کے سوا باقی تمام سورت مکیہ ہے ۔ مقاتل نے کہا کہ آیت ’’ فَلَعَلَّکَ تَارِکٌ‘‘ اور ’ اُولٰٓئِکَ یُؤْمِنُوۡنَ بِہٖ ‘‘ اور ’’ اِنَّ الْحَسَنٰتِ یُذْہِبْنَ السَّیِّاٰتِ‘‘ کے علاوہ پوری سورت مکی ہے۔ (1)

آیات،کلمات اورحروف کی تعداد:

        اس سورت میں 10 رکوع ، 123 آیتیں ، 1600 کلمے اور 9567 حروف ہیں۔ (2)

’’ہود ‘‘نام رکھنے کی وجہ :

         ا س سورت کی آیت نمبر 50تا 60 میں اللہ تعالیٰ کے نبی حضرت ہود عَلَیْہِ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَام اور ان کی قوم عاد کا واقعہ بیان کیا گیا ہے ، اس واقعے کی مناسبت سے اس سور ت کا نام ’’سورۂ ہود‘‘ رکھا گیا۔

سورۂ ہود کے بارے میں اَحادیث:

(1) …حضرت عبداللہ بن عباس رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُمَا فرماتے ہیں ،حضرت ابو بکر صدیق رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُ نے عرض کی: یا رسولَ اللہ ! صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ، حضور صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ پر بڑھاپے کے آثار نمودار ہوگئے۔ ارشاد فرمایا : ’’مجھے سورئہ ہود، سورئہ و اقعہ، سورۂ مرسلات، سور ئہ عَمَّ یَتَسَآئَ لُوْنَ، اور سورئہ اِذَالشَّمْسُ کُوِّرَتْ ، نے بوڑھا کردیا۔(3)   غالباً یہ اس وجہ سے فرمایا کہ ان سورتوں میں قیامت ، مرنے کے بعد اٹھائے جانے ، حساب اور جنت و دوزخ کاذکر ہے۔(4)

(2) …حضرت عبداللہ بن عمر رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُمَا سے روایت ہے، حضورِ اقدس صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَنے ارشاد

ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ

1خازن، تفسیرسورۃ ہود، ۲/۳۳۸۔

2خازن، تفسیرسورۃ ہود، ۲/۳۳۸-۳۳۹۔

3ترمذی، کتاب التفسیر، باب ومن سورۃ الواقعۃ، ۵/۱۹۳، الحدیث: ۳۳۰۸۔

4خازن، تفسیرسورۃ ہود، ۲/۳۳۹۔