We have moved all non-book items like Speeches, Madani Pearls, Pamphlets, Catalogs etc. in "Pamphlet Library"

Book Name:Sirat ul Jinan jild 4

ہیں اور (کہتے ہیں ) آگ کا عذاب چکھو۔

{ وَلَوْ تَرٰۤی:اوراگر آپ دیکھتے۔} آیت کا خلاصہ یہ ہے کہ اے حبیب! صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ اگر آپ کافروں کی وہ حالت دیکھیں کہ جب موت کے وقت فرشتے کافروں کی روحیں نکالتے ہیں تو بڑا خوفناک منظر دیکھیں گے۔ فرشتے  آگ میں سرخ کئے ہوئے لوہے کے گُرز کافروں کے چہرے اور پیٹھوں پر مار تے ہوئے کہتے ہیں کہ آگ کا عذاب چکھو اور گرزوں کی ضرب و مار سے جو زخم لگتا ہے اس میں آگ بھڑک اٹھتی ہے۔ (1)

ذٰلِکَ بِمَا قَدَّمَتْ اَیۡدِیۡکُمْ وَ اَنَّ اللہَ لَیۡسَ بِظَلّٰمٍ لِّلْعَبِیۡدِ ﴿ۙ۵۱

ترجمۂکنزالایمان: یہ بدلہ ہے اس کا جو تمہارے ہاتھوں نے آگے بھیجا اور اللہ بندوں پر ظلم نہیں کرتا۔

 

 

ترجمۂکنزُالعِرفان: یہ بدلہ ہے ان اعمال کا جو تمہارے ہاتھوں نے آگے بھیجے ہیں اور اللہ بندوں پر ظلم نہیں کرتا۔

{ ذٰلِکَ:یہ۔} یعنی یہ مصیبتیں اور عذاب تمہارے اپنے کئے ہوئے کفر اور گناہوں کا بدلہ ہیں اور اللہ تعالیٰ کسی پر جرم کے بغیر عذاب نہیں کرتااور کافر پر عذاب کرنا عدل ہے۔آیت میں ’’ظَلّٰمٍ‘‘ سے مراد بہت ظلم کرنے والا نہیں بلکہ مُطْلَق ظلم کرنے والا مراد ہے اور معنی یہ ہوا کہ اللہ بندوں پر ظلم نہیں کرتا۔

کَدَاۡبِ اٰلِ فِرْعَوْنَ ۙ وَالَّذِیۡنَ مِنۡ قَبْلِہِمْ ؕ کَفَرُوۡا بِاٰیٰتِ اللہِ فَاَخَذَہُمُ اللہُ بِذُنُوۡبِہِمْ ؕ اِنَّ اللہَ قَوِیٌّ شَدِیۡدُ الْعِقَابِ ﴿۵۲

ترجمۂکنزالایمان: جیسے فرعون والوں اور ان سے اگلوں کا دستور وہ اللہ کی آیتوں سے منکر ہوئے تو اللہنے انہیں ان کے گناہوں پر پکڑا بیشک اللہ قوت والا سخت عذاب وا لا ہے۔

ترجمۂکنزُالعِرفان:  جیسا فرعونیوں اور ان سے پہلوں کا طریقہ وہ اللہکی آیات کے ساتھ کفر کرتے تھے تو اللہ نے

ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ

1خازن، الانفال، تحت الآیۃ: ۵۰، ۲/۲۰۲-۲۰۳۔