Book Name:Islam Ki Bunyadi Batain Part 03

٭…  ایسا تعویذ یا انگوٹھی چھونا یا پہننا جس پر آیت یا حروف مقطعات لکھے ہوں حرام ہے۔    )[1](

(موم جامے والے یا پلاسٹک میں لپیٹ کر کپڑے یا چمڑے وغیرہ میں سلے ہوئے تعویذ کو پہننے یا چھونے میں مضائقہ نہیں )

                                                (2) … جو بے وضو ہو اس پر درج ذیل کام کرنا حرام ہیں :  

٭…  جس برتن یا کٹورے پر کوئی سورت یا آیتِ مبارکہ لکھی ہو بے وضو اور بے غسل دونوں کو اس کا چھونا حرام ہے۔)[2](

٭…  قرآنِ پاک کا ترجمہ فارسی یا اردو یا کسی دوسری زبان میں ہو اس کو بھی پڑھنے یا چھونے میں قرآن پاک ہی کا سا حکم ہے۔)[3](

بے وضو یا بے غسل کے لیے جائز کام

سوال …:                    ناپاکی کی حالت میں کون کون سے کام کرنے میں کوئی حرج نہیں ؟

جواب …:            ناپاکی کی حالت میں درج ذیل کام کرنے میں کوئی حرج نہیں :  

                                                (1)… جو بے وضو ہو وہ درج ذیل کام کر سکتا ہے:  

 (1)… اگر قرآنِ پاک جزدان (یعنی غلاف) میں ہو تو بے وضو یا بے غسل جزدان پر ہاتھ لگانے میں حرج نہیں ۔ )[4](

(2)… کسی ایسے کپڑے یا رومال وغیرہ سے قرآن پاک پکڑنا جائز ہے جو نہ اپنے تابع ہو نہ قرآنِ پاک کے۔)[5](

(3)… بے وُضو کو قرآنِ مجید یا اسکی کسی آیت کا چھونا حرام ہے۔ بے چھوئے زبانی یادیکھ کر پڑھے تو کوئی حَرَج نہیں ۔)[6](

                                                (1)… جس پر غسل فرض ہو وہ درج ذیل کام کر سکتا ہے:  

(1)… قرآنِ پاک کی آیت دعا کی نیت سے یا تبرک کیلئے مثلاً بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِیْمِ یا ادائے شکر کے لئے  اَلْحَمْدُ لِلّٰهِ رَبِّ الْعٰلَمِیْنَۙ(۱)یا کسی مسلمان کی موت یا کسی قسم کے نقصان کی خبر پر  اِنَّا لِلّٰهِ وَ اِنَّاۤ اِلَیْهِ رٰجِعُوْنَؕ(۱۵۶)یا ثناء کی نیت سے پوری سورۂ فاتحہ یا آیۃالکرسی یا سورۂ حشر کی آخری تین آیات پڑھیں اور ان سب صورتوں میں قرآن پڑھنے کی نیت نہ ہو تو کوئی حرج نہیں ۔)[7](

(2)… آخری تینوں قل بلا لفظِ قل بہ نیت ثناء پڑھ سکتے ہیں ۔ لفظِ قل کیساتھ ثناء کی نیت سے بھی نہیں پڑھ سکتے کیوں کہ اس صورت میں ان کا قرآن ہونا متعین ہے، نیت کو کچھ دخل نہیں۔)[8](

(3)… قرآنِ مجید دیکھنے میں کچھ حَرَج نہیں اگرچہ حروف پر نظر پڑے اور الفاظ سمجھ میں آئیں اور خیال میں پڑھتے جائیں ، کیونکہ خیال میں پڑھنے کا اعتبار نہیں ۔

(4)… درود شریف اور دعاؤں کے پڑھنے میں حَرَج نہیں مگر بہتر یہ ہے کہ وُضو یا کُلی کر کے پڑھیں ۔

(5)… اذان کا جواب دینا بھی جائز ہے۔

٭…٭…٭

تیمّم

سوال …:                    تیمم کیا ہے؟

جواب …:            تیمم اصل میں وُضو اور غُسل کا بدل ہے، یعنی جس کا وُضو نہ ہو یا نہانے کی ضرورت ہو اور پانی پر قدرت نہ ہو تو وہ وُضو اور غُسل کی جگہ تیمم کر سکتا ہے۔

سوال …:                    کیا وُضو اور غُسل کے تیمم میں کوئی فرق ہے؟

جواب …:            جی نہیں !  وضو اور غُسل کے تیمم میں کوئی فرق نہیں ۔

 



[1]    بہارِ شریعت،   غسل کا بیان،   ۱ / ۳۲۶

[2]    عالمگيری،   كتاب الطهارة،   الباب السادس،   الفصل الرابع،   ۱ / ۳۹   (3)    بہارِ شریعت،   غسل کا بیان،   ۱ / ۳۲۷

[3]    بہارِ شریعت،   غسل کا بیان،   ۱ / ۳۲۷

[4]    الهداية،   كتاب الطھارات،   باب الحيض والاستحاضة،   ۱ / ۳۳

[5]    ردالمحتار،   كتاب الطهارۃ،   مطلب یطلق الدعاء    الخ،   ۱ / ۳۴۸

[6]    المرجع السابق

[7]    عالمگیری،   كتاب الطهارة،   الباب السادس،   الفصل الرابع،   ۱ / ۳۸بہارِ شریعت،   غسل کا بیان،   ۱ / ۳۲۶

[8]    بہارِ شریعت،   غسل کا بیان،   ۱ / ۳۲۶



Total Pages: 146

Go To