Book Name:Islam Ki Bunyadi Batain Part 03

ماں باپ کے لئے فائدہ مند ہو گا؟ کیا ڈاکٹر کی ڈگری مفید ہو گی یا حفظِ قرآنِ کریم؟ عقل مند کے لئے اشارہ کافی ہے۔

پیارے مدنی منو!  اے کاش!  آپ قرآنِ کریم کی تعلیم کی اہمیت کو سمجھیں اور قرآن و سنت کی تعلیم کو خوب دلجمعی کے ساتھ سیکھیں ۔ اے کاش!  ایسا مدنی ماحول بن جائے کہ ہر بچے کے لئے تعلیمِ قرآن لازمی ہو جائے اور ہر ماں باپ اپنے ہر بچے کو قرآن و سنت کی تعلیم کے زیور سے آراستہ کرے۔  ؎

یہی ہے آرزو تعلیم قرآں عام ہوجائے

ہر اک پرچم سے اونچا پرچم اسلام ہوجائے

٭…٭…٭

اچھی اچھی نیتیں

نیک اعمال کے قبول ہونے کے لئے ہمیں اپنی نیتوں میں اخلاص پیدا کرنا ہو گا۔ آئیے جانتے ہیں کہ نیت کسے کہتے ہیں ؟اور اچھی اچھی نیتوں کے ذریعے ہم کس قدر ثوابِ آخرت کا ذخیرہ اکٹھا کر سکتے ہیں ۔

نیت کسے کہتے ہیں ؟

نیت لُغوی طورپردل کے پختہ اِرادے کو کہتے ہیں اور شَرْعاً عبادت کے اِرادے کو نیت کہا جاتا ہے۔ )[1](

جتنی نیتیں اُتنا ثواب

ایک عمل میں جتنی نیّتیں ہوں گی اتنی نیکیوں کا ثواب ملے گا، مثلاً کسی محتاج رشتے دار کی مدد کرنے میں اگر نیت فقط صدقہ کی ہوگی تو ایک نیت کا ثواب ملے گا اور اگر صلۂ رحمی (یعنی خاندان والوں سے نیکی کا برتاؤ کرنے) کی نیّت بھی کریں گے تو دوگنا ثواب پائیں گے۔ )[2]( اسی طرح مسجد میں نماز کے لئے جانا بھی ایک عمل ہے اس میں بہت سی نیّتیں کی جاسکتی ہیں ، امامِ اہلسنّت مولانا شاہ احمد رضاخان عَلَیْہِ رَحمَۃُ الرَحْمٰن نے فتاویٰ رضویہ جلد5 صفحہ673 میں اس کے لئے چالیس نیّتیں بیان کی ہیں ، آپ مزید فرماتے ہیں :  بے شک جو علمِ نیّت جانتا ہے ایک ایک فعل کو اپنے لئے کئی کئی نیکیاں کرسکتا ہے۔)[3](  بلکہ مباح کاموں میں بھی اچھی نیتیں کرنے سے ثواب ملے گا مثلاً خوشبو لگانے میں اتباعِ سنت، تعظیمِ مسجد، فرحتِ دماغ اور اپنے اسلامی بھائیوں سے ناپسندیدہ بُودور کرنے کی نیّتیں ہوں تو ہر نیّت کاالگ ثواب ہوگا۔)[4](

ہر کام سے پہلے اچھی اچھی نیّتیں کر لیجئے

پیارے مدنی منو!  بلاشبہ اچھی نیت کرنا ایک ایسا عمل ہے جو محنت کے اعتبار سے بے حد ہلکا لیکن اجروثواب کے لحاظ سے بہت عظیم ہے۔ اس لئے ہمیں چاہئے کہ ہر نیک عمل شروع کرنے سے پہلے اچھی اچھی نیتیں کرلیں حتی کہ کھانے، پینے، لباس پہننے اور سونے وغیرہ میں بھی اچھی نیت شامل حال ہو۔ مثلاًکھانے پینے سے اللہ  عَزَّ وَجَلَّ  کی اطاعت پر قوت حاصل کرنے کی نیت ہو۔ لباس پہنتے وقت یہ نیت ہو کہ اللہ  عَزَّ وَجَلَّ  نے مجھے اپنی پوشیدہ چیز یں چھپانے کا حکم دیا ہے اور اللہ  عَزَّ وَجَلَّ  کی نعمت کے اظہار کی نیت ہو۔ سونے سے یہ مقصود ہوکہ جو عبادات اللہ  عَزَّ وَجَلَّ  نے فرض کی ہیں ان کو ادا کرنے میں مدد حاصل ہو۔ )[5](

 ’’ مدینہ ‘‘  کے پانچ حروف کی نسبت سے اچھی نیت کے 5فضائل

(1) مسلمان کی نیّت اس کے عمل سے بہتر ہے۔  )[6](

(2) سچی نیت سب سے افضل عمل ہے۔)[7](

(3)اچھی نیت بندے کو جنت میں داخل کردیتی ہے۔)[8](

(4) اللہ  عَزَّ وَجَلَّ  آخرت کی نیت پر دنیا عطا فرما دیتا ہے مگر دنیا کی نیت پر آخرت نہیں عطا فرماتا ہے۔ )[9](

 



[1]    ماخوذ از نزھۃالقاری شرح صحیح البخاری،   باب بدء الوحی،   ۱ / ۲۲۴

[2]    اشعۃ اللمعات،   ۱ / ۳۶

[3]    فتاویٰ رضویہ،   ۵ / ۶۷۳

[4]    اشعۃاللمعات،   ۱ / ۳۷ ملخصاً

[5]    اچھی اچھی نیّتوں سے متعلق رَہنمائی کیلئے شیخِ طریقت،   امیرِ اہلسنّت،   بانی دعوتِ اسلامی حضرت علامہ مولانا ابو بلال محمد الیاس عطّار قادری دَامَتْ بَرَکَاتُہُمُ الْعَالِیَہ کا سنّتوں بھرا کیسٹ بیان نیّت کا پھل اورنیتوں سے متعلق آپ کے مُرتّب کردہ کارڈ یا پمفلٹ مکتبۃ المدینہ کی کسی بھی شاخ سے ہدیّۃً حاصِل فرمائیں۔

[6]    المعجم الکبير،   ۶ / ۱۸۵،   حديث: ۵۹۴۲

[7]    جامع الاحادیث،   ۲ / ۱۹،   حدیث:۳۵۵۴

[8]    کنزالعمال،  کتاب الاخلاق،  باب النیۃ،   ۳ / ۱۶۹،   حدیث:۷۲۴۵

[9]    کنزالعمال،  کتاب الاخلاق،   باب الزھد،   ۳ / ۷۵،   حدیث:۶۰۵۳



Total Pages: 146

Go To