Book Name:Imamay kay Fazail

(3)سیّدنا امام حسن کا سیاہ عمامہ

       حضرت سیّدنا ابو رَزِین رَحمۃُ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَلَیْہ سے مروی ہے ہمیں (نواسۂ رسول ) حضرت ِ سیّدناامام حسن رَضِیَ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَنْہ نے جمعہ کے دن خطبہ ارشاد فرمایا تو آپ رَضِیَ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَنْہ سیاہ عمامہ شریف سجائے ہوئے تھے۔  (مصنف ابن ابی شیبہ ، کتاب اللباس ، باب فی العمائم السود، ۱۲/ ۵۴۱، حدیث : ۲۵۴۷۰)

(4)سیّدنا انس بن مالک کا سیاہ عمامہ

       حضرت سیّدنا سَلَمَہ بِن وَرْدَان رَحمۃُ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَلَیْہ کہتے ہیں کہ میں نے حضرت سیّدنا انس رَضِیَ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَنْہ کو دیکھا آپ نے بغیر ٹوپی کے سیاہ عمامہ باندھ رکھا تھا اور اس کا شملہ پیچھے کی جانب لٹکایا ہوا تھا۔  (مصنف ابن ابی شیبہ، کتاب اللباس، باب فی العمائم السود، ۱۲/ ۵۳۸، حدیث : ۲۵۴۵۵)     

(5)سیّدنا خالد بن ولید کا سیاہ عمامہ

         حضرت سیّدنا خالد بن ولید رَضِیَ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَنْہ نے بھی اپنے سر پر سیاہ عمامہ شریف سجایا ہے جیسا کہ امام ابوعبد اللّٰہ  محمد بن عمر واقدی عَلیْہ رَحْمَۃُ اللّٰہ  الْقَوِی نے بیان فرمایا کہ حضرت سیّدنا خالد بن ولید رَضِیَ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَنْہ نے جنگِ یرموک میں حجازی موزے پہنے اور سیاہ عمامہ شریف باندھا۔  (فتوح الشام، جبلۃ بن الایہم، ۱/ ۱۷۴)

(6)سیّدنا عَمَّار بن یَاسِر کا سیاہ عمامہ

       حضرت سیّدنا مِلْحَان بِن ثَوْبَانَ رَحمۃُ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ فرماتے ہیں کہ حضرت سیّدنا عَمَّار بِن یَاسِر رَضِیَ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَنْہ ہمارے پاس کوفہ میں ایک سال تک رہے آپ رَضِیَ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَنْہ ہر جمعے سیاہ عمامہ شریف باندھ کر خطبہ دیا کرتے۔  (سنن الکبری للبیہقی، کتاب الجمعۃ، باب ما یستحب للامام من حسن الہیئۃ الخ ، ۳/ ۳۵۰، حدیث : ۵۷۷۴)

(7)سیّدنا عبد  اللّٰہ  ابن عمر کا سیاہ عمامہ

       حضرت سیّدنا اَ بُو لُؤْلُؤَہ رَحمۃُ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ فرماتے ہیں :  میں نے حضرت سیّدنا عبد اللّٰہ  ابنِ عمر رَضِیَ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَنہُمَا   کو سیاہ عمامہ شریف باندھے دیکھا۔  (سنن الکبریٰ للبیہقی، کتاب الجمعۃ، باب ما یستحب للامام من حسن الہیئۃ الخ، ۳/ ۲۴۷، حدیث : ۵۷۷۶)     

       حضرت سیّدنا رِشیدِین بن کُرَیب رَحْمَۃُ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ فرماتے ہیں :  رَاَیْتُ عَلٰی اِبْنِ عُمَرَ عِمَامَۃً سَوْدَائَ یعنی میں نے حضرت سیّدنا عبد اللّٰہ  ابن عمر رَضِیَ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَنْہُما کو سیاہ عمامہ شریف سجائے دیکھا۔  (الکامل فی ضعفاء الرجال، من اسمہ رشدین، ۴/ ۶۴)

(8)سیّدنا ابوہریرہ کا سیاہ عمامہ

        حضرت سیّدنا خَبَّاب بِن عُرْوَہ رَحْمَۃُ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ فرماتے ہیں :  رَاَیْتُ اَبَا ہُرَیْرَۃَ وَعَلَیْہِ عِمَامَۃٌ سَوْدَائُ یعنی میں نے حضرت سیّدنا ابوہریرہ رَضِیَ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَنْہ کو سیاہ عمامہ شریف باندھے دیکھا۔  (سیراعلام النبلاء ، ۴/ ۲۰۴، رقم : ۲۲۲)

تابعین و تبع تابعینِ عُظّام کے سیاہ عمامے

        میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو! چونکہ تابعین و تبع تابعینِ عُظّام رَحِمہُمُ  اللّٰہ  السَّلام بھی مختلف رنگوں کے عمامے سجایا کرتے تھے اور ان ہی میں سے بعض تابعین و تبع تابعینِ عُظّام عَلَیْہِمُ الرِّضوَان سیاہ عمامے شریف بھی سجایا کرتے تھے جن میں سے چند ایک کے مبارک عماموں کا ذیل میں ذکر کیا گیا ہے چنانچہ

(1)سیّدنا علی بن عبد اللّٰہ   کا سیاہ عمامہ

       حضرت سیّدنا رِشیدِ ین بن کُرَیب رَحْمَۃُ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ فرماتے ہیں :  رَاَیْتُ عَلٰی عَلِیِّ بْنِ عَبْدِ اللّٰہ  بْنِ عَبَّاسٍ عِمَامَۃً سَوْدَائَ یعنی میں نے حضرت سیّدنا علی بن عبد اللّٰہ  بن عباس رَضِیَ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَنْہُمکو سیاہ عمامہ شریف سجائے دیکھا۔  (الکامل فی ضعفاء الرجال ، من اسمہ رشدین، ۴/ ۶۴)

(2) سیّدنا سعید بن مسیّب کا سیاہ عمامہ

       حضرت  سیّدنا عُبید بن نِسطاس َرحمَۃُ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَلَیْہ فرماتے ہیں :  رَاَیْتُ سَعِیدَ بْنَ الْمُسَیَّبِ یَعْتَمُّ بِعِمَامَۃٍ سَوْدَائَ ثُمَّ یُرْسِلُہَا خَلْفَہُ یعنی میں نے حضرت سیّدنا سعید بن مسیب رحمَۃُ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَلَیْہ کو سیاہ عمامہ شریف باندھے دیکھا جس کا شملہ آپ نے اپنے پیچھے لٹکایا ہوا تھا ۔  (طبقات ابن سعد ، الطبقۃ الاولی من اہل المدینۃ من التابعین، سعید بن المسیب ، ۵/ ۱۰۵)

(3)سیّدنا عطاء بن یزید لیثی کا سیاہ عمامہ

       حضرت سیّدنا ابو عبید رحمَۃُ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَلَیْہ فرماتے ہیں :  میں نے حضرت سیّدنا عطاء بن یزید لیثی عَلیْہ رَحْمَۃُ اللّٰہ  الْقَوِی کو نماز پڑھتے دیکھا آپ نے سیاہ عمامہ شریف یوں باندھ رکھا تھا کہ اس کا ایک شملہ اپنی پشت پر لٹکا رکھا تھا اور داڑھی مبارک میں زرد خضاب بھی لگا رکھا تھا۔  (مسند احمد ، مسند ابی سعید الخدری رضی  اللّٰہ  عنہ ، ۴/ ۱۶۴، حدیث : ۱۱۷۸۰)

(4)سیّدنا محمد بن حنفیہ کا سیاہ عمامہ

        حضرت سیّدنا رِشْدِیْنَ بنِ کُرَیْب رَحْمَۃُ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ فرماتے ہیں :  رَاَیْتُ ابْنَ الحَنَفِیَّۃِ یَعْتَمُّ بِعِمَامَۃٍ سَوْدَائَ وَیُرْخِیْہَا شِبْراً اَوْ دُوْنَہُ یعنی میں نے حضرت سیّدنا محمد بن حَنَفِیہَّ  رَضِیَ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَنْہ کو سیاہ عمامہ شریف باندھے دیکھا ، آپ رَضِیَ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَنْہ نے اس کا بالشت بھر یا اس سے کچھ زائد شملہ لٹکا رکھا تھا۔  (سیراعلام النبلاء ، ابن الحنفیۃ الخ، ۵/ ۱۴۹، رقم : ۴۰۳)

(5)سّیدنا امام ابو یوسف کا سیاہ عمامہ

       سیّدنا امامِ اعظم ابوحنیفہ  رَضِیَ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَنْہ کے ہونہار شاگرد، قَاضِیُ القُضَاۃ  حضرت سیّدنا امام ابویوسُف َرحمَۃُ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَلَیْہ کے سیاہ عمامہ شریف سجانے کا ذکر بھی کُتُب میں موجود ہے چنانچہ ملفوظاتِ اعلیٰ حضرت میں ہے کہ ’’کتبِ فقہ میں ہے کہ ایک مرتبہ آپ (سیّدنا امام ابو یوسف)’’ یَومُ الشَّک‘‘ میں یعنی جس روز شُبہ ہو کہ وہ رمضان کی پہلی ہے یا شعبان کی تیس۔  آپ بعدِ ضحوہ



Total Pages: 101

Go To