Book Name:Faizan e Syed Ahmed Kabir Rafae

  اُسی جگہ ٹھہرے رہتےاور فرماتے :اس نے ہم سے سایہ حاصل کیا ہے۔ اسی طرح  جب آستىن پر بلى سو جاتى اور نماز کا وقت ہوجاتا تو آستىن کو کاٹ دىتےمگر بلى کو نہ جگاتے اور نماز سے فَراغت کے بعد آستین دوبارہ سی لیتے۔([1])

خارش زَدہ کتے کی خبر گیری

 اىک مرتبہ آپرَحْمَۃُ اللہ ِتَعَالٰی عَلَیْہ نے اىک خارش زَدہ کتے کودىکھا جسے بستى والوں نےباہر نکال دیا تھا، آپ اسے جنگل مىں لےگئے اور اس پرسائبان بنایا نیز اسے   کھلاتے پلاتےاور ہر طرح سے اس کا خیال رکھتے رہے حتّی کہ آپ رَحْمَۃُ اللہ ِتَعَالٰی عَلَیْہ  کی بھرپور توجُّہ کے نتیجے میں  جب وہ تَندُرُسْت ہوگیا توآپ نے اسے گرم پانى سے نہلاکر اجلا کردیا ۔([2])

میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو!واقعی بُزرگانِ دین رَحمَہُمُ اللہُ الْمُبِین کا طرزِ عمل ہمارے لئے قابلِ تقلید ہے لہٰذا ہمیں بھی چاہئے کہ انسان تو انسان جانوروں سے بھی بدسُلوکی نہ کریں اوران کے ساتھ حُسنِ سلوک سے پیش آئیں کیا خبرہمارا یہی عمل اللہ عَزَّ  وَجَلَّ   کی بارگاہ میں قبول ہوجائے اورہماری دنیا وآخرت سنورجائے۔

 حضرت سَیِّدُنا ابو ہریرہ رَضیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہ  سے روایت ہے کہ حضور نبیِّ کریم، رَءُوْفٌ رَّحیمصَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم نے ارشاد فرمایا :ایک فاحشہ عورت کی صرف

 



[1]طبقاتِ کبریٰ للشعرانی،  ص۲۰۰

[2]طبقاتِ کبریٰ للشعرانی ، ص۲۰۰ملخصاً



Total Pages: 34

Go To