Book Name:Fatawa Razawiyya jild 29

 

 

 

 

 

عقائد و کلام و دینیات

 

مسئلہ ۲۳:از حسن پور ضلع مراد آباد بذریعہ طفیل احمد صاحب قادری برکاتی رضوی مرسلہ حافظ اکرام اﷲ خاں،۱۸ ربیع الآخر ۱۳۳۶ھ

سوال اوّل:تقویۃ الایمان مولوی اسمعیل کی فخر المطابع لکھنؤ کی چھپی ہوئی کے صفحہ ۳۲۹ پر جو عرس شریف کی تردید میں کچھ نظم ہے،اور رنڈی وغیرہ کا حوالہ دیا ہے اسے جو پڑھا تو جہاں تك عقل نے کام دیا سچا معلوم ہوا کیونکہ اکثر عرس میں رنڈیاں ناچتی ہیں اور بہت بہت گناہ ہوتے ہیں اور رنڈیوں کے ساتھ ان کے یار آشنا بھی ہوتے ہیں اور آنکھوں سے سب آدمی دیکھتے ہیں اور طرح طرح کے خیال آتے ہیں کیونکہ خیالِ بد و نیك اپنے قبضہ میں نہیں،ایسی اور بہت ساری باتیں لکھی ہیں جن کو دیکھ کر تسلی بخش جواب دیجئے۔

سوال دوم:اور اس کتاب کے صفحہ ۳۰۰ پر دربارہ علم غیب کے جو فتوے درج ہیں کہ مچھر مارنے کا آپ کو علم ہوجاتا ہے اس کے جواب میں جو مولوی صاحب نے درج کی سورہ نمل آیۃ چہارم،پارہ ۷ سورہ انعام آیت پنجم و سورہ اعراف و سورہ احقاف اور اس سے آگے حدیث شریف پیش کی ہیں جس سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ آپ کو علمِ غیب کیا کل کا بھی حال معلوم نہیں تھا کہ کیا ہوگا حدیث شریف سے ظاہر ہوتا ہے،اور یہ کہنا کہ شیطان کو علم زیادہ ہے اور آپ کو کم،تو عرض ہے کہ بہت ساری باتیں ایسی ہیں کہ ہمارے محمد صلی الله تعالٰی علیہ وسلم کو نہیں دی گئیں اوروں کو دی گئیں۔


 

 



Total Pages: 750

Go To