Book Name:Fatawa Razawiyya jild 19

اگر یہ قول کسی مدعی کے مقابل ہوتا،یہاں یہ صورت نہیں،سائل نے بیان کیا کہ چاروں بھائی اس مکان پر قابض تھے،ایك نے صرف اپنا حصہ تقسیم کرانے کا دعوٰی کیا تھا نہ کہ اوروں کے حصوں کا،اس کے جواب میں دوسرے نے کہا اس مکاں میں ہمارا حق نہیں یعنی چاروں بھائیوں کانہیں تاکہ وہ تقسیم نہ کراسکے اس صورت میں اس کا یہ کہنا محض لغو ہے اور اس کا حق بدستور باقی ہے۔ عالمگیریہ میں ہے:

اذا قال ذوالید لیس ھذا لی اولیس ملکی اولا حق لی او لیس لی فیہ حق اوماکان لی اونحو ذٰلك ولا منازع حیثما قال ثم ادعی ذٰلك احد فقال ذوالید ھو لی صح ذٰلك منہ والقول قولہ الخ [1] واﷲ تعالٰی اعلم۔

جب قابض خود کہے کہ یہ میری ملکیت نہیں یامیرا نہیں یا میرا حق نہیں یا میرا نہ ہے اس قسم کے الفاظ کہے،اوریہ الفاظ کہتے وقت کوئی دعویدار نہ بنا،پھر بعد میں ایك شخص نے اس چیز پر دعوٰی کیا تو اس کےجواب میں اب قابض کہے کہ چیزیں میری اپنی ہے تو قابض کی بات صحیح قرار پائے گی اور اس کی وضاحت مان لی جائیگی الخ۔واﷲ تعالٰی اعلم۔(ت)

مسئلہ ۱۴:                                از مراد آباد محلہ کٹھگر بیچ مرسلہ سید شرافت حسین صاحب                           ۵ ذی الحجہ ۱۳۳۷ھ

کیا فرماتے ہیں علمائے دین اس مسئلہ میں کہ زید نے بعوض مبلغ یکصد روپے کے اپنا حصہ واقعہ مکان بدست مسماۃ ہندہ رہن کیا۔ رہن نامہ میں بوقت تصدیق روبرو رجسٹرار صاحب(صہ معہ)نقد وصول پاکر مبلغ(صہ عہ/)کا رجسٹری سے پہلے وصول پانے کا اقرار کیاہے،اسی تفصیل سے وصول زر رہن کی کیفیت عبارت تصدیق میں درج ہے ہندہ نے واپسی زر رہن کا دعوٰی کیا ہے۔ زید مدعا علیہ نے جواب داخل کیا ہے کہ رہن نامہ فرضی ہے،وجہ تحریر کی یہ ہے کہ مدعا علیہ کے خُسرال والے مُسرتھے کہ زید اپنا حصہ واقعہ مکان مذکوربحق اپنی زوجہ کے تحریر کردیں۔اس اندیشہ کی وجہ سے بمشورت باہمی فرضی رہن نامہ بنام ہندہ تحریر کردیا گیا تھا(مہ لعہ/)جو رجسٹری میں بذریعہ عمرو وصول پائے تھے وہ روپیہ بیرون رجسٹری عمرو کو مدعا علیہ نے واپس کردئے تھے اور دستاویز مذکورہ کے فرض ہونے کا مدعا علیہ کو بس بیرون کچہری اقرار ہے اس پر کچہری نے صرف ایك تنقیح قائم کی ہے آیا مبلغ(صہ معہ/)منجملہ سو روپیہ زر ہرن کے جو مدعا علیہ کو ذریعہ عمرو روبررو رجسٹرار صاحب مدعیہ سے وصول ہوئے تھے وہ اسی وقت بیرون رجسٹری عمرو مذکور کو واپس دئے تھے ثبوت ذمہ مدعا علیہ،


 

 



[1] فتاوٰی ہندیہ کتاب الدعوٰی الباب الثامن نورانی کتب خانہ پشاور ۴ /۶۴



Total Pages: 692

Go To