We have moved all non-book items like Speeches, Madani Pearls, Pamphlets, Catalogs etc. in "Pamphlet Library"

Book Name:Fatawa Razawiyya jild 17

 

 

 

 

 

 

باب بیع التلجیۃ

(دکھلاوے کی بیع کا بیان)

 

 

مسئلہ ۲۶۹:کیا فرماتے ہیں علمائے دین ومفتیان شرع متین صورت مسئولہ میں کہ زید نے ایك قطعہ مکان جس کا وہ مالك تھا بدست عمرو اپنی کسی مصلحت سے بلاوصول زرثمن فرضی طریق سے بیعنامہ تصدیق کرادیا اور قبضہ اپنا مبیعہ پرنہیں دیا ہے،اور عمرو کی اب یہ خواہش ہے کہ میں اسی مکان کو زید کے فوت ہونے پر اس کے ورثہ کو ہبہ کردوں،دریافت طلب امر یہ ہے کہ آیا اسی مکان کو ہبہ کرنا شرعا جائز ہے یانہیں اور اگر ہبہ جائز ہے تو کن کن وجوہات میں واپس ہوسکتاہے اور کس صورت سے واپس نہیں ہوسکتا۔بینوا توجروا

الجواب:

عمروکو اگر اقرار وتسلیم یا بینہ عادلہ شرعیہ سے ثابت ہے کہ یہ بیع محض بطورفرضی کی گئی ہے جسے بیع تلجیہ کہتے ہیں تو بیع شرعا منعقد ہوگئی ولہذا اگر عاقدین اسے جائز کردیں نافذ ہوجائیگی۔

فی الدر المختار انہ بیع منعقد غیر لازم کالبیع بالخیار [1] الخ وفی ردالمحتار

درمختار میں ہے کہ وہ بیع منعقدہے مگر لازم نہیں جیسے خیار کے ساتھ بیع الخ،اور ردالمحتار میں

 


 

 



[1] درمختار کتاب البیوع باب الصرف مطبع مجتبائی دہلی ۲ /۵۷



Total Pages: 715

Go To