We have moved all non-book items like Speeches, Madani Pearls, Pamphlets, Catalogs etc. in "Pamphlet Library"

Book Name:Fatawa Razawiyya jild 17

 

 

 

 

 

 

باب الاقالۃ
(بیع اقالہ کا بیان)

 

 

مسئلہ ۱۰۲:                                              از مرادآباد محلہ باڑہ شاہ صفا مسئولہ حافظ عبدالمجید                        ۶شوال ۱۳۳۹ھ

کیا فرماتے ہیں علمائے دین اس مسئلہ میں کہ زید نے ایك جائداد عمرو کی چھ سو پچیس۶۲۵روپے پر اپنے دوست بکرکے ذریعہ خریدنے کے لئے طے کرائی،قیمت طے ہونے کے بعد سو روپیہ بطور بیعنامہ عمرو کو دے کررسید لکھوائی،رسید میں بکر نے دھوکے سے اپنا نام بھی تحریر کرالیا اوردعوٰی کردیا کہ جائداد تو میری اورتمھاری دونوں کی مشترك طے ہوئی،حالانکہ یہ بالکل غلط ہے،یہ قصہ پنچایت میں ڈالا گیا،پنچوں نے دونوں سے پچاس پچاس روپے لے کر جمع کرائے اور کہا جو شخص یہ روپیہ لے گا اسے جائداد نہیں ملے گی اور جو جائداد لے گا یہ روپیہ نہیں لے سکتا۔زید نے جائداد خریدنی منظور کی،بکر نے سوروپے اٹھالئے اور رسید لکھنی چاہی،ابھی لکھی نہ تھی کہ بکر کے محلہ والے جو زید سے بغض وعداوت رکھتے ہیں زید سے بولے کہ یہ رسید بیعنامہ عمرو کو واپس کردو ہم تم کو یہ جائداد خریدنے نہ دیں گے بلکہ اسے مسجد کی آمدنی کے لئے خریدیں گے،زید نے مجبوری رسید عمرو کو واپس کردی،اب بے اجازت زید آمدنی مسجد کے لئے یہ جائداد خریدیں یہ جائز ہے یانہیں ؟ بکرکے اہل محلہ یہ بھی کہتے ہیں کہ تمھارا اس میں کچھ دخل نہیں نہ تمھاری رضامندی کی ضرورت ہے۔بینوا توجروا

الجواب:

صورت مستفسرہ میں کہ زید نے بکر کو ایك شے معین خریدنے کا وکیل کیا اسے کوئی اختیار نہ تھا کہ غیبت


 

 



Total Pages: 715

Go To