Book Name:Fatawa Razawiyya jild 14

کبیرہ اور سخت کبیرہ اور فاعل فاسق اور عذاب نار کامستحق اور امامت کا محض نالائق،اسے معزول کرنا واجب اور اس کے پیچھے نماز ممنوع وگناہ اور اس کاپھیرنا لازم،اورجو اس کی حمایت کرتے ہیں مورد عذاب ومستحق عقاب ہوتے ہیں،خصوصا وہ کہنے والے کہ ہم تو زید پر ایمان لائے ہیں انھیں تجدید اسلام ونکاح چاہئے اور زید کو بھی جبکہ قولًا یا فعلًا کوئی کفر صریح اس سے ثابت نہ ہو ورنہ خودہی اس کانکاح باطل اور اسلام زائل،والعیاذ باللہ،کافرسے دوستانہ رکھنا مسلمانوں کو شایان نہیں،

قال اﷲ تعالٰی" یٰۤاَیُّہَا الَّذِیۡنَ اٰمَنُوۡا لَا تَتَّخِذُوۡا عَدُوِّیۡ وَ عَدُوَّکُمْ اَوْلِیَآءَ تُلْقُوۡنَ اِلَیۡہِمۡ بِالْمَوَدَّۃِ وَ قَدْ کَفَرُوۡا بِمَا جَآءَکُمۡ مِّنَ الْحَقِّۚ"[1]۔

اﷲ تعالٰی نے فرمایا:اے ایمان والو میرے اوراپنے دشمنوں کودوست نہ بناؤ تم انھیں خبریں پہنچاتے ہو دوستی سے حالانکہ وہ منکر ہیں اس حق کے جو تمھارے پا س آیاہے۔(ت)

شراب کی آمدنی کہ کافر کے پاس ہے اس کا وہ حکم نہیں جو مسلم کے پاس ہونے کا ہے،کافر کہ بخوشی اپنے مال سے مسلمان کو دیتا ہے مسلمان کو اس کے لینے میں حرج نہیں اور آمدنی سے خریدے ہوئے کھانے میں تو اور توسیع ہے کہ مسلمان کے یہاں بھی جب تك عقد ونقد دونوں حرام زر پر جمع نہ ہوں اس کی خباثت شیئ مشتری کی طرف سرایت نہیں کرتی کما ھومذہب الامام الکرخی المفتی بہ(جیساکہ امام کرخی کامذہب اور مفتی بہ قول ہے۔ت)واﷲ تعالٰی اعلم۔

مسئلہ ۲۹۲:             ازکانپور محلہ فیل خانہ قدیم مرسلہ مولانا مولوی سید محمد آصف صاحب                            ۲۸ صفر ۱۳۳۸ھ

قبلہ کونین وکعبہ دارین دامت فیوضہم بعد تسلیمات فدویانہ التماس ایں کہ کتاب ارشاد رحمانی تصنیف مولوی محمد علی سابق ناظم ندوہ جن کے بابت ان کے ایك پیر بھائی نے مجھ سے کہاکہ وہ اب سابق افعال وکوشش متعلق ندوہ سے تائب ہوگئے ہیں واﷲ تعالٰی اعلم۔حالات مولانا فضل الرحمن صاحب رحمۃ اﷲ تعالٰی علیہ میں لکھا کہ بخاری شریف کے سبق میں حضرت سلیمان علی نبینا وعلیہ الصلوٰۃ والسلام کے ذکر پر احمد میاں نے کہا کہ کرشن کے سولہ ہزار گوپیاں تھیں،اسی پر مولانا مرحوم نے فرمایا کہ یہ لوگ مسلمان تھے اور مصنف نے ان کے بعد لکھاہے کہ مرزا مظہر جان جاناں رحمۃ اﷲ علیہ نے تحریر فرمایا ہے کہ کسی مردے کے کفر پر تاوقتیکہ ثبوت شرعی نہ ہوحکم نہ لگانا چاہئے،اور اﷲ تعالٰی نے فرمایا ہے کہ لِکُلِّ قَوْمٍ ہَادٍ [2](ہر قوم کے لئے ہادی ہے۔ ت)اس تقدیر پر ہوسکتاہے کہ


 

 



[1] القرآن الکریم ۶۰/۱

[2] القرآن الکریم ۱۳/ ۷



Total Pages: 712

Go To