We have moved all non-book items like Speeches, Madani Pearls, Pamphlets, Catalogs etc. in "Pamphlet Library"

Book Name:Fatawa Razawiyya jild 11

 

 

 

رسالہ

ماحی الضلالۃ فی انکحۃ الھند وبنجالہ ١٣١٧ھ

(بنگال اور ہندوستان میں نکاحوں کے بارے میں کوتاہی کو مٹانے والا)

 

بسم الله الرحمن الرحیم

 

مسئلہ ٧:                                 ١٢ جمادی الاولٰی ١٣١٧ہجریہ

کیا فرماتے ہیں علمائے دین ومفتیان شرع متین اس مسئلہ میں کہ فی زمانہ جو کہ عقد ہوتے ہیں کہ ایك شخص غیر کو ولی ہندہ نے وکیل قرار دے کر اور دو شخص اور ہمراہ اس کے واسطے گواہی کے مقرر کرکے واسطے اجازت لینے نکاح کے ہندہ کے پاس بھیجے وہ شخص کسی کا سر اور کسی کا پاؤں کچلتا ہوا ہنگامہ مستورات میں جاکر قریب ہندہ کے بیٹھا اور یہ کلمات کہے کہ تو مجھ کو واسطے عقد اپنے کے وکیل کردے وہ بے چاری بباعث رواج اس ملك اور شرم کے کب گویا ہوتی ہے اکثر مستورات اس کو فہمائش کرتی ہیں مگر وہ نہیں جواب دیتی اور بعض بعض کچھ گریہ یا"ہوں"کا اشارہ کردیتی ہیں۔بعد کو وکیل صاحب باہر تشریف مع دونوں گواہوں کے لاکر،دولھا کے روبرو آکر بیٹھتے ہیں اور داہنے دولھا کے ایك شخص اور،کہ دعوٰی قضا کا رکھتے ہیں اور پیشہ کفش دوزی یا خیاطی یا نور بافی کا کرتے ہیں وہ بھی بیٹھتے ہیں۔۔۔۔۔جوکہ وکیل صاحب مع گواہوں کے تشریف لائے تھے وہ قاضی صاحب سے سلام علیك کرکے رو برو دولھا کے بیٹھ گئے،قاضی صاحب نے وکیل صاحب کی طرف متوجہ ہوکر فرمایا کہ آپ کا آنا کہاں سے ہوا،وکیل صاحب نے جواب اس کے،ارشاد کیاکہ دختر فلاں نے واسطے عقد اپنے کے مجھ کو وکیل مقرر کرکے


 

 



Total Pages: 739

Go To