Book Name:Fatawa Razawiyya jild 10

یا ۱۲بارود یا اس کے ذبح کے لیے ۱۳چھری دینا، ۱۴اس کے انڈے توڑنا، ۱۵پر اکھاڑنا، ۱۶پاؤں یا بازو توڑنا، اس کا ۱۷دودھ دوہنا، اس کا گوشت یا ۱۸انڈے پکانا، ۱۹بھوننا، ۲۰بیچنا، ۲۱خریدنا، ۲۲کھانا، ۲۳ناخن کترنا، ۲۴سر سے پاؤں تك کہیں سے کوئی بال جداکرنا، ۲۵منہ یا ۲۶سر کسی کپڑے وغیرہ سے چھپانا، ۲۷بستر یا کپڑے عــــہ کی بقچی یا گٹھڑی سر پر رکھنا،۲۸عمامہ باندھنا، ۲۹برقع و دستانے پہننا، ۳۰موزے یاجرابیں وغیرہ جو پنڈلی اور ۳۱اقدام کے جوڑ کو چھپائے پہننا، ۳۲سِلا کپڑا پہننا، ۳۳خوشبو بالوں یا ۳۴بدن یا کپڑوں میں لگانا، ۳۵ملاگیری یاکسم کیسر غرض کسی خوشبو کے رنگے ۳۶کپڑے پہننا جبکہ ابھی خوشبو دے رہے ہوں، ۳۷خالص خوشبو مشک، عنبر، زعفران، جاوتری، لونگ، الائچی، دارچینی، زنجبیل وغیرہ کھانا، ۳۸ایسی خوشبو کا آنچل میں باندھنا ۳۹جس میں فی الحال مہك ہو، ۴۰جیسے مشک، عنبر، زعفران، سر یا ڈاڑھی خطمی یا کسی ۴۱خوشبودار ایسی چیز سے دھونا ۴۲جس سے جوئیں مرجائیں، ۴۳وسمہ یا ۴۴مہندی کا خضاب لگانا، گوند وغیرہ سے ۴۵بال جمانا، زیتون یا تل کا ۴۶تیل اگر چہ بے خوشبو ہو ۴۷بدن یا بالوں میں لگانا، کسی کا ۴۸سر مونڈنا اگر چہ اس کا احرام نہ ہو، ۴۹جوں مارنا پھینکنا، کسی کو اس کے مارنے کا اشارہ کرنا، کپڑا اس کے مارنے۵۰ کودھونا یا ۵۱دھوپ میں ڈالنا، بالوں۵۲ میں پارہ وغیرہ اس کے ۵۳مرنے کو لگانا، غرض جوں کے ہلاك پر کسی پر کسی طرح باعث ہونا،

(١٠) احرام میں یہ باتیں مکروہ ہیں:

بدن کا میل چھڑانا، بال یا بدن کھلی یا صابون وغیرہ بے خوشبو کی چیز سے دھونا، کنگھی کرنا، اس طرح کھجانا کہ بال ٹوٹے یا جوں گرے، انگر کھا، کُرتا یا چُغہ پہننے کی طرح کندھوں پر ڈالنا، خوشبوں کی دھونی دیا ہوا کپڑا کہ ابھی خوشبو دے رہا ہوں پہننا، اوڑھنا، قصدًا خوشبو سونگھنا اگر چہ خوشبودار پھل یا پتہ ہو جیسے لیموں، نارنگی، پودینہ، عطردانہ، سریامنہ پر پٹی باندھنا، غلاف کعبہ مکہ معظمہ کے اندر اس طرح داخل ہونا کہ غلاف شریف سریا منہ سے لگے، ناك وغیرہ منہ کا کوئی حصہ کپڑے سے چھپائے، یا کوئی ایسی چیز کھانا پینا جس میں خوشبو پڑی ہو اور نہ ہو پکائی گئی ہو نہ زائل ہوگئی ہو، بے سلا کپڑا رفو کیا یاپیوند لگا ہوا پہننا، تکیہ پر منہ رکھ کر

عــــہ: لو حمل المحرم علی راسہ شیأ یلبسہ الناس یکون لا بسا، وان کان لا یلبسہ الناس کا لا جانۃ ونحوہ فلا[1] اھ ش عن النھر وا لخانیۃ ١٢ منہ (م)

اگر محرم نے کئی ایسی شئی اٹھائی جسے لوگ پہنتے ہیں تو اب لباس پہننے والا سمجھا جائیگا، اور اگر لوگ اسے نہیں پہنتے مثلا ٹب وغیرہ تو اب لابس نہ ہوگا، اھ ش نہر اور خانیہ کے حوالے سے ہے۔ ١٢ منہ (ت)

 


 

 



[1] ردالمحتار فصل فی الاحرام مصطفی البابی مصر ۲/ ۱۷۶



Total Pages: 836

Go To