Book Name:Fatawa Razawiyya jild 10

(ش) نمبر۷:علّامہ عبد الغنی بن ا سمٰعیل نابلسی قدس سرہ حدیقہ ندیہ شرح طریقہ محمدیہ میں فرماتے ہیں:

وفی العتابی اذاخلاالزمان من سلطان ذی کفایۃ فالامورمؤکلۃ الی العلماء ویلزم الامۃ الرجوع الیھم۔[1]

عتابی میں ہے کہ جب دَور ایسے بادشاہ سے خالی ہو جو صاحبِ قدرت ہوتو اس وقت امور علماء کے سپرد ہوں گے اور اُمت پر لازم ہے کہ اس وقت وہ علماء کی طرف رجوع کرے۔(ت)

اسی میں ہے:

المتبع اعلمھم فان استووااقرع بینھم۔[2]

علماء میں جو سب سے زیادہ صاحبِ علم ہوگا لوگ اُس کی اتباع کریں، اگر علم میں برابر ہوں تو ان میں قرعہ ڈال لیں۔(ت)

تنبیہ: آج کل اسلامی ریاستوں میں بھی قضاۃ و حکام اکثر بے علم ہوتے ہیں، تو عالمِ دین اُن پر بھی مقدّم۔اور وقتِ اختلاف فتوٰی عالم پر ہی عمل واجب۔

حکایت: امام الحرمین ابو المعالی رحمۃ اﷲتعالٰی علیہ کے زمانے میں بادشاہِ وقت کے یہاں ۲۹کے ہلال پر گواہیاں گزریں۔ بحکم سلطان اعلان ہوا کہ کل عید ہے، یہ خبر امامِ الحرمین کو پہنچی۔ گواہیاں قابلِ قبول نہ تھیں، امام کے حکم سے معًا دوسرا اعلان ہو اکہ بحکم امام ابو المعالی کل روزہ ہے۔صبح کو تمام شہر روزہ داراٹھا۔ حاسدوں نے یہ خبر خوب رنگ کربادشاہ تك پہنچائی کہ اگر امام چاہیں تو سلطنت چھین لیں۔ ملاحظہ ہو کہ اُنہیں کا حکم مانا گیا اور حکمِ سلطان کی کچھ پروانہ ہُوئی۔ بادشاہ نے برافروختہ ہو کر چوب دار بھیجے کہ جیسے بیٹھے ہیں تشریف لائیں۔ امام ایك جبّہ پہنے تھے، ویسے ہی دربار میں رونق افروز ہوئے ،اشتعال شاہی دوبالا ہوا کہ لباس درباری نہ تھا سوال کیا، فرمایا ، اطاعتِ اولوالامر واجب ہے۔ حکم تھا جیسے بیٹھے ہیں آئیں، میں یُوں ہی بیٹھا تھا چلاآیا، کہا اعلان  خلاف پر کیا باعث تھا؟ فرمایا: انتظامِ دنیا تمہارے سپرد ہے اور انتظامِ دین ہمارے متعلق۔ بادشاہ پر ہیبتِ حق طاری ہُوئی۔ باعزازِ تمام رخصت کی اور بد گویوں کو سزادی۔

تنبیہ: علمِ دین فقہ وحدیث ہے منطق و فلسفہ کے جاننے والے علماء نہیں، یہ امور متعلق بہ فقہ ہیں، تو جو فقہ میں زیادہ ہے وہی بڑا عالمِ دین ہے، اگر چہ دُوسرا حدیث و تفسیر سے زیادہ اشتعال رکھتا ہو پھر بھی عالمِ دین نہ ہوگا مگر سنی المذہب کہ فاسد العقیدہ جہل مرکب میں گرفتار جو جہل بسیط سے ہزار درجہ بدتر، خصوصًا غیر مقلدین کہ


 

 



[1] الحدیقۃ الندیہ     النوع الثالث فی المندوب الیہا    مکتبہ نوریہ رضویہ فیصل آباد     ۱ /۳۵۱

[2] الحدیقۃ الندیہ     النوع الثالث فی المندوب الیہا    مکتبہ نوریہ رضویہ فیصل آباد     ۱ /۳۵۱



Total Pages: 836

Go To