Book Name:Fatawa Razawiyya jild 9

کو لے کر تشریف لے گئے ____ آگے لفظ حدیث یوں ہیں :

فقال عمر یافلان ولمن خاف مقام ربہ جنتٰن، فاجابہ الفتی من داخل القبر یا عمر قد اعطانیہا ربی فی الجنۃ مرتین [1]۔

نسأل اﷲ الجنۃ لہ الفضل والمنۃ وصلی اﷲ تعالٰی علی نبی الانس والجنۃ واٰلہ وصحبہ واصحابہ السنۃ اٰمین اٰمین اٰمین!

 

یعنی امیر المومنین نے جوان کا نام لے کر فرمایا: اے فلان! جو اپنے رب کے پاس کھڑے ہونے کا ڈر کرے اس کے لیے دو باغ ہیں، جوان نے قبر میں سے آواز دی، اے عمر! مجھے میرے رب نے یہ دولت عظمی جنت میں دو بار عطا فرمائی۔

ہم اﷲ سے جنت کے خواستگار ہیں، اسی کے لیے فضل و احسان ہے۔ اور خدائے برتر کا درود سلام ہو انس و جِن کے نبی صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم اور ان کی آل واصحاب اور اہل سنت پر۔ الٰہی! قبول فرما، قبول فرما، قبول فرما! (ت)

المقصد الثالث فی اقوال العلماء

(مقصد سوم علماء کے اقوال میں)

قال الفقیر محرر السطور غفرلہ المولٰی الغفور اس مسئلہ میں ہمارے مذہب کی تصریح وتلویح وتنقیص وتلمیح و تائید وترجیح وتسلیم وتصحیح میں ارشادات متکاثرہ واقوال متوافرہ ہیں حضراتِ عالیہ صحابہ کرام وتابعین فخام و اتباع اعلام ومجتہدین اسلام وسلف وخلف علمائے عظام سے رضی اﷲ تعالٰی عنہم اجمعین وحشرنا فی زمرتھم یو م الدین اٰمین (اﷲ تعالٰی ان سب سے راضی ہو ا ور ہمیں روز قیامت ان کے زمرے میں اٹھائے۔ الہٰی قبول فرما۔ ت) فقیر غفرلہ، اﷲ تعالٰی اگر بقدر قدرت ان کے حصر واستغفار کا ارادہ کرے موجز عجالہ حد مجلد سے گزرے، لہٰذا اولًا صرف سو ١٠٠ ائمہ دین وعلماء کاملین کے اسماء طیبہ شمار کرتاہوں جن کے اقوال اس وقت میرے پیش نظر اور اس رسالہ کے فصول ومقاصد میں جلوہ گر وفضل اﷲ سبحانہ او سمع و اکثر (اور اﷲ سبحانہ کا فضل او ر زیادہ وسیع افروز تر ہے۔ ت) پھر دس نا م ان عالموں کے بھی حاضر کروں گا جن پر اعتماد میں مخالف مضطر وھذا لدیھم ادھٰی وامرو الحمد اﷲ العلی الاکبر ( اور یہ ان کے نزدیك سخت اور تلخ ہے۔ اور سب خوبیاں بلندی وکبریائی والے خداہی کے لیے ہیں۔ ت)

فمن الصحابۃ رضوان اﷲ تعالٰی اجمعین علیھم اجمعین: (١) امیر المؤمنین عمرفاروق اعظم


 

 



[1] کنز العمال  بحوالہ ك حدیث ۴۶۳۴ موسستہ الرسالہ بیروت ۲ / ۱۷۔۵۱۶



Total Pages: 948

Go To