Book Name:Fatawa Razawiyya jild 9

ہم میں کوئی نہیں کہ سکتا کہ اس کے اعمال قطعا مقبول____ در صورت ثانیہ جب آپ کے نزدیك بھی بعض اکابر کا ایسا قوی الادراك عــــہ١ ہونا مسلم کہ بتوجہ خاص باذن اﷲ تعالٰی دعائے زائر سن لیں تو وہاں کرم الہٰی سے ہر وقت امید و توقع موجود کہ سننے کا علم نہیں، تو نہ سننے پر بھی جزم نہیں، پھر کلام کیوں کر، ناروا ہوسکتا ہے۔ جناب کو اپنا اطلاق حکم ملحوظ خاطر عاطر رہے۔

سوال (٤): یہ تو ظاہر کہ سائل جن کے دروازوں پر سوال کرتے ہیں وہ ہر وقت فراخ دست نہیں ہوتے، اب ان سائلوں کو حضرت کے اعتقاد میں ہر شخص کے حالِ خانہ پر اطلاع و وقوف ہے یا نہیں، اگر کہے ہاں توجس طرح جناب کے نزدیك زا ئر بیچاروں نے حضرت اولیاء کو سمیع وبصیر علی الاطلاق مانا، یونہی عــــہ۲  آپ نے ان بھیك مانگنے والوں، جوگیوں، سادھووں کو علیم وخبیر علی الاطلاق جانا۔ والعیاذ باﷲ سبحٰنہ وتعالٰی، اور اگر فرمائیے نہ، توجبکہ سائل بلاحصول علم مرتکب سوال ہوتے ہیں، آپ کے طور پر گویا اہل بیوت کو معطی وقدیر علی الاطلاق قرار دیتے ہیں یا نہیں____ بر تقدیر اول واجب ہوا کہ سوال شرك نہ ہو تو ادنٰی درجہ شائبہ وشبہہ شرك ضرور ہو حالانکہ بہت اکابر علماء اولیاء نے وقت حاجت اس پر اقدام فرمایا ہے، حضرت ابوسعید خراز قدس سرہ،العزیز جن کی عظمت عرفان وجلالت شان آفتاب نیمروز سے اظہر، ہنگامہ فاقہ ہاتھ پھیلاتے اور شیأ ﷲ فرماتے ___ یو نہی سیدالطائفہ جنید بغدادی کے استاد حضرت ابوحفص حداد وحضرت ابراہیم ادھم وامام سفیان ثوری رحمۃ اﷲ تعالٰی علیہم اجمعین سے وقت ضرورت شرعیہ سوال منقول [1]نقل کل ذلك العلامۃ المناوی فی التیسیر عــــہ۳  ( یہ سب علامہ مناوی نے تیسیر میں نقل کیا ہے۔ ت)کتب فقہیہ شاہد عادل کہ بعض صور میں علمائے کرام نے سوال فرض بتایا ہے۔ معاذاﷲ ! یہ آپ کے طور پر شرك یا شائبہ شرك فرض ہونا ہوگا۔ برتقدیر ثانی زائر بیچارہ بلا حصول علم 

عــــہ١: اگر تسلیم تحقیقی ہے توا مرظاہر اور بطور تجویزو تقدیر ہے۔تویہی عرض کیا جاتا ہے کہ یہ صورت مان کرپھر اس کلام کی کیا گنجائش ہے۔ یہ نکتہ محفوظ رہنا چاہئے، ١٢ منہ

عــــہ۲: تشبیہ مقصود بالذات ہے کہ یہ سوال نقض اجمالی ہے ورنہ ہمارے نزدیك نہ صرف اتنا علم وخبر مطلق نہ فقط اتنا سمع وبصرمطلق۔ ١٢ منہ

عــــہ۳: تحت قولہ صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم من سأل من غیر فقر فکا نمایا کل الجمر ١٢ منہ

زیر ارشاد رسول اکرم صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم: جس نے بغیر احتیاج کے سوال کیا گویا وہ اپنے پیٹ میں انگارے بھرتاہے ۱۲منہ (ت)

 


 

 



[1] التیسیر شرح جامع الصغیر تحت حدیث من سأل مکتبۃ الامام الشافعی ریاض سعودیہ ٢/٤٢١



Total Pages: 948

Go To