Book Name:Fatawa Razawiyya jild 9

 

 

 

رسالہ

اھلاك الوھابیین علٰی توھین قبور المسلمین  ۱۳۲۲ھ

( قبورمسلمین کی توہین کی بِنا پر وہابیوں کی سرکوبی)

 

مسئلہب١٣٨: علمائے دین ومفتیان شرعِ متین اس مسئلہ میں کیا فرماتے ہیں کہ ایك گورستان ( اہلسنت) قدیم کی ( پرانی) قبروں کو عمدًا کھود کر اپنے رہنے کے لیے مکان بنانا موافق مذہب حنفی کے جائز ہے یا نہیں؟ اور ایسا کرنے میں اہل قبور کی توہین واہانت ہوگی یا نہیں؟ بینوا توجروا

الجواب:

ومنہ الھدایۃ الی الحق والصواب

جاننا چاہئے کہ انبیاء واولیاء علیہم الصلٰوۃ والسلام وعامہ مومنین اہلسنت کے ساتھ جو قلبی عداوت فرقہ نجدید وہابیہ کو ہے ایسی او رکسی فرقہ مبتدعہ کو نہیں ہے، اسی وجہ سے اس فرقہ محدثہ کے اکا بر ملاعنہ کی تصانیف اباطیل اہانتِ محبوبانِ خدا سے بھری پڑی ہیں، جس کا جی چاہے وہ نجدی ملا اسمٰعیل دہلوی وصدیق حسن بھوپالی وخرم علی و رشید گنگوہی وغیرہ کی تالیفاتِ باطلہ اٹھا کر دیکھ لے کہ قِسم قِسم کی اہانتوں سے پر ہیں۔ منجملہ ان کے ایك اہانت قبور انبیاء وشہداء واولیاء علیہم السلام کا منہدم ونابود تابمقدور کرنا اس فرقے کا شعار ہوگیا ہے۔

شیخ  نجدی نے روضۂ اقدس کو گرانے کا ارادہ کیا تھا

علامہ احمد بن علی بصری کتاب فصل الخطاب فی ردضلالات ابن عبدالوھاب میں فرماتے ہیں:


 

 



Total Pages: 948

Go To