Book Name:Fatawa Razawiyya jild 8

 

 

 

 

 

باب سجود السھو

(سجدۂ سہو کا بیان)

 

مسئلہ١٢١٦:              ٧ ربیع الآخر ١٣٠٧ھ

کیا فرماتے ہیں علمائے دین اس مسئلہ میں کہ ایك شخص الحمد شریف پڑھ کر سوچتا رہا کہ کون سی سورت پڑھوں اور اس میں کچھ دیر لگ گئی تو کیا حکم ہے؟ بینوا توجروا 

الجواب:

اگر بقدر ادائے رکن ای مع سنتہ کما فی الغنیۃ( یعنی سنت کے مطابق جیسے غنیـہ میں ہے۔ ت) یعنی مثلاجتنی دیر میں تین بار سبحان اﷲ کہہ لیتا اتنے وقت تك سوچتا رہا تو سجدہ سہو لازم ہے ورنہ نہیں۔ ردالمحتار میں ہے:

التفکر الموجب للسھو مالزم منہ تاخیر الواجب اوالرکن عن محلہ بان قطع الاشتغال بالرکن اوالواجب قدر اداء رکن و ھوالاصح [1] اھ ملخصا۔ واﷲ تعالٰی اعلم

ایسا سوچنا جو سہو کا سبب ہے وہ ہوگا جو واجب یا رکن کو اپنے مقام سے مؤخر کردے مثلًا اداء رکن کی مقدار کسی رکن یا واجب سے اعراض کر لیا جائے یہی اصح ہے اھ ملخصًا ۔ واﷲ تعالٰی اعلم

 


 

 



[1] ردالمحتار باب سجودالسہو مطبوعہ مصطفی البابی مصر ١/٥٥٨



Total Pages: 673

Go To