Book Name:Fatawa Razawiyya jild 8

مسجّع الفاظ کی ایسی لڑیاں اور مقفی جملوں کی ایسی مالائیں آپ کے منظوم ومنثور کلام میں اتنی کثرت سے پائی جاتی ہیں کہ ان کا احاطہ ازبس دشوارہے؛ تاہم ان میں سب سے زیادہ حیرت انگیز"فتاوٰی رضویہ"کا عربی خطبہ ہے، جو بلاشبہ فصاحت وبلاغت کاایك اچھوتا شاہکار ہے۔ دلکش اشارات، روشن تلمیحات، خوبصورت استعارات اور خوشنما تشبیہات پرمشتمل اس بلاغت پارے کی خصوصیت یہ ہے کہ خطبے کے جملہ لوازمات و مناسبات۔ یعنی اﷲ تعالٰی کی حمد، رسول اﷲ صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم کی تعریف، صحابہ اور اہلبیت کی مدح ، رسول اﷲ صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم اور ان کے اہل بیت پردرودوسلام ۔ یہ تمام چیزیں کتب فقہ اورائمہ کے ناموں سے اداکی گئی ہیں یعنی کتب فقہ کے ناموں اورائمہ کے اسماء گرامی کو اس طرح ترتیب دیاگیاہے کہ کہیں حمد کے غنچے چٹك اُٹھے ہیں اور کہیں نعت کے پھول کھل پڑے ہیں، کہیں منقبت کے گجرے بن گئے ہیں اور کہیں درودوسلام کی ڈالیاں تیار ہوگئی ہیں۔

اس کے ساتھ ساتھ جملہ محسنات بدیعیہ ازقسم براعت استہلال ورعایت سجع وغیرہ بھی پوری طرح ملحوظ رکھی گئی ہیں ۔ اتنی قیودات اور پابندیوں کے باوجود خطبے کی سلاست وروانی میں ذرہ برابرفرق نہیں پڑا۔ نہ جملوں کی بے ساختگی میں کہیں جھول پیدا ہوا، نہ تراکیب کی برجستگی میں کوئی خلل واقع ہوا۔ ذٰلِك فَضْلُ اﷲ یُؤتِیْہِ مَنْ یَّشَاءُ ط وَاﷲ ذُو الفَضْلِ الْعَظِیْمِo
اس مختصر مقالے میں اتنی گنجائش تونہیں کہ اس ضیابارخطبے کی تمام خوبیاں گنائی جائیں، تاہم چنددلآویز جھلکیاں خوش ذوق

قارئین وسامعین کی نذر ہیں ع
   گرقبول افتدز ہے عزّوشرف

حمد باری تعالٰی

فقہ حنفی میں امام اعظم ابوحنیفہ رحمۃ اﷲ علیہ کی ایك مشہور تصنیف کانام الفقہ الاکبرہے، اسی طرح جامع کبیر، زیادات، فیض، مبسوط، دُرَرْ، غُرَرْبھی بلندپایہ فقہی تصانیف ہیں، امام احمدرضا نے ان ناموں میں کہیں ضمیرکا، کہیں حرف جر وغیرہ کا اضافہ کرکے ان کو اس انداز میں ترتیب دیا ہے کہ کتابوں کے یہ نام ہی اﷲ تعالٰی کی بہترین حمد بن گئے ہیں، فرماتے ہیں:
اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ ھُوَ الْفِقْہُ الْاَکْبَرْ وَالْجَامِعُ الْکَبِیْرُ لِزِیَادَاتِ فَیْضِہِ الْمَبْسُوطِ الدُّرَرِ الْغُرَر (سب تعریفیں اﷲ ہی کے لئے ہیں، اﷲ کی تعریف ہی سب سے بڑی دانائی ہے اور اﷲ تعالٰی کے پھیلے ہوئے فیض کے شفاف اور تابناك اضافوں کی بڑی جامع ہے)


 

 



Total Pages: 673

Go To