Book Name:Fatawa Razawiyya jild 6

کلمہ پڑھاتا ہے اور محمد رسول اﷲ بظاہراس کی زبان سے نہیں سُنا جاتا اور وُہ امامت بھی کرتا ہے ایسے شخص کے پیچھے نماز امّت محمدیہ حنفیہ علٰی صاحبہا الصلٰو ۃ والسلام کی درست ہے یا نہیں؟

الجواب:

صوفیہ کرام نے تصفیہ قلب کے لئے ذکرشریف لا الٰہ الا اﷲ رکھا ہے کہ تصفیہ حرارت پہنچانے سے ہوتا ہے اور کلمہ طیّبہ کا یہ جز گرم وجلالی ہے اور دوسرا جز کریم سرد خنك جمالی ہے، اگر ایسے ہی موقع پرصرف لاالٰہ الا اﷲ کی تلقین کرتا ہے تو کچھ حرج نہیں اوراگر خود کلمہ طیبہ پڑھنے میں صرف لاالٰہ الا اﷲ کافی سمجھتا ہے اور محمد رسول اﷲ سے احتراز کرتا ہے تو اس کی امامت ناجائزہے کہ یہ ذکر پاك محمد رسول اﷲ صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم سے معاذ اﷲ بے پرواہی پر دلیل ہے اور اگر واقعی اسے محمد رسول اﷲ کہنے سے انکار ہے یا یہ ذکر کریم اُسے مکروہ و ناگوار ہے توصریح کافرو مستوجب تخلید فی النار ،والعیاذ باﷲ تعالٰی،واﷲ تعالٰی اعلم۔

مسئلہ نمبر ٥٦٦:                      ٤ جمادی الاخری ١٣١٤ھ

کیا فرماتے ہیں علمائے دین اگرامام نماز پڑھائے جماعت کی اور اﷲ آواز سے کہے اوراکبر نہ کہے کہ کسی مقتدی کو نہ سنائی دے جائز ہے یا ناجائز؟

الجواب:

اﷲ اکبرپورا با آواز کہنا مسنون ہے سنّت ترك ہوئی نماز میں کراہت تنزیہی آئی مگر نماز ہوگئی، واﷲ تعالٰی اعلم

مسئلہ نمبر ٥٦٧:     از ورڈ ضلع نینی تال ڈاك خانہ کچھا مرسلہ عبدالعزیز خان       ٤رمضان المبارک١٣١٥ھ

کیا فرماتے ہیں علمائے دین اس مسئلہ میں کہ ایك شخص نے رباعی نماز سے ایك رکعت آخری پائی اور وُہ شخص قعدہ اولٰی کے واسطے دُوسری رکعت میں قعدہ کرے گا، یااس کو چاہئے کہ دوسری میں قعدہ کرے یا تیسری میں اور اگر تیسری میں قعدہ اولٰی کیا تواُس پر سجدہ سہوآئے گا یا نہیں؟بینوا توجروا ۔

الجواب :

قول ارجح میں اسے یہی چاہئے کہ سلام ِامام کے بعد ایك ہی رکعت پڑھ کر قعدہ اولٰی کرے پھر دوسری بلا قعدہ پڑھ کر تیسری پر قعدہ اخیرہ کرے ،دُرمختار میں ہے:

یقضی اول صلاتہ فی حق قرأۃ واٰخرھا فی حق تشھد فمدرك رکعۃ من غیر فجر یاتی

مسبوق قرأت کے باب میں اپنی نماز کا اوّل اور تشہد کے باب میں اپنی نماز کا آخر پڑھے(یعنی فوت شدہ نماز کو قرأت کے حق میں شروع نماز سمجھے اور تشہد کے

 


 

 



Total Pages: 736

Go To