Book Name:Jame Ul Ahadees Jild 1

وبینکم کتاب اللہ عزوجل ،فماوجدنا فیہ من حلال استحللناہ وماوجدنا فیہ من حرام حرمناہ ،الا وان ماحرم رسول اللہ صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم مثل ماحرم

اللہ ۔ (۱۳)

       عنقریب ایسا وقت آئے گا کہ آدمی اپنے تخت پر تکیہ لگائے بیٹھا ہوگا اور اس کے سامنے میری حدیث بیان کی جائے گی تووہ جواب میں کہے گا : ہمارے اور تمہارے درمیان فیصلہ کرنے والی اللہ کی کتاب ہے ، جو کچھ ہم اس میں حلال پائیں گے اسے حلال جانیں گے اور جو کچھ حرام پائیںگے اسے حرام سمجھیں گے ۔آگاہ رہو کہ جو کچھ رسول اللہ   صلی اللہ  تعالیٰ علیہ وسلم نے حرام

فرمایا وہ بھی ویسا ہی حرام ہے جیسے اللہ تعالیٰ نے حرام فرمایا ۔  

       قرآن عظیم کی مندرجہ ذیل آیت سے بھی حدیث وسنت کی بنیادی اوراستنادی حیثیت

کا واضح ثبوت فراہم ہوتاہے ۔

       اللہ تعالیٰ کا ارشاد ہے: ۔

        وانزلنا الیک الذکر لتبین للناس مانزل الیہم۔( ۱۴)

       اور اے محبوب ! ہم نے تمہاری طرف یہ یادگار اتاری کہ تم لوگوں سے بیان کردو جو انکی

طرف اترا ۔

       امت مسلمہ کو یہ عظیم کتاب اسی لئے عطاہوئی تھی کہ یہ ازاول تاآخر ہدایت ہے ۔ لیکن اسکی تعلیما ت محض زبان دانی کے ذریعہ حاصل نہیں ہوسکتی تھیں ۔ اسی لئے حضور نبی کریم صلی اللہ 

تعالیٰ علیہ وسلم کو ہادی برحق مبعوث فرمایا اور اسکی توضیح وتفسیر کی ذمہ داری بھی آپ کو سونپی گئی ۔

       آپ نے یہ فریضہ باحسن وجوہ اداکیا ،نظم قرآن ہم تک پہونچانے کیلئے تو حضور اقدس  صلی اللہ  تعالیٰ علیہ وسلم نے اول دن سے ہی تاکید فرمادی تھی اور عملی طور پر کاتبان وحی یہ فریضہ انجام دیتے ،لہذا نزول قرآن کے ساتھ ساتھ اسکو لکھا جاتا رہا ۔ پھر دور صدیقی میں اسکی جمع وتدوین ہوئی اور عہد عثمانی میں اسی نسخہ کو شائع کردیا گیا ۔یہاں تک کہ کسی شبہ کے بغیر بطورتواتر یہ

قرآن ہم تک نقل ہو کر پہونچا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۱۳۔      السنن لا بن  ماجہ عن المقدام بن معدی  کرب الکندی رضی اللہ عنہ      ۱/۳

 



Total Pages: 604

Go To