$header_html

Book Name:Jame Ul Ahadees Jild 1

ہو یا دو سے ۔ اور کبھی  متابع و شاہد ایک معنی میں بولے جاتے ہیں ۔

جرح و تعدیل

       جرح و تعدیل  سے متعلق آپ پڑھ چکے کہ تعدیل راوی کی عدالت و ضبط کے تحقیق کو کہتے ہیں اور جرح سے مراد وہ امور ہیں جو ان دونوں پر اثر انداز ہوتے ہیں۔ جن کی تفصیلی تعداد  تیرہ بیان کی جاتی ہے ۔    

عدالت پر اثر انداز: -

        Xکذب      Xاتہام کذب  Xفسق ٭بدعت      X جہالت

ضبط پر اثر انداز :

       Xزیادۃ غلط    Xسوء حفظ     X فرط غفلت     X زیادت وہم                      Xمخالفت ثقات X شہرت تساہل   X شہرت قبول تلقین Xنسیان

        جرح و تعدیل   وہی معتبر ہے جو ائمہ فن سے بغیر کسی تعصب یا بے جا حمایت کے ساتھ منقول ہو ، البتہ تعدیل مبہم کا اعتبار ہوگا کہ وجوہ عدالت بیان کئے بغیر ثقہ وغیرہ کہنا ، کیونکہ وجوہ عدالت کثیر ہیں جن کا احاطہ ایک وقت میں ممکن نہیں ۔

        البتہ جرح مبہم غیر مفسر معتبر نہیں ، کہ اسباب جرح اتنے زائد نہیں کہ ان کے شمار میں دشواری ہو ۔ نیز اسباب جرح میں اختلاف ہے ، ہو سکتا ہے ایک سبب کسی  کے نزدیک معتبر ہو اور دوسروں کے یہاں نہ ہو ۔

       لہذا ابن صلاح نے تصریح کی کہ فقہ و اصول میں یہ ہی طے ہے ، اور خطیب نے ائمہ نقاد کا یہ ہی مذہب بتایا اور اسی پر عمل ہے ۔ (۱۱۵)

       خیال رہے کہ  جن علماء و فقہاء کو امت نے مقتدا بنالیا ان پر کسی کی تنقید و جرح منقول نہیں ۔ (۱۱۶)

        الفاظ جرح اور ان کے مراتب

        ادنی سے اعلیٰ کی طرف

    ۱۔ جو نرمی ، تساہل اور لا پرواہی  پر دلالت کریں ۔ جیسے :۔

       X لین الحدیث Xفیہ مقال    Xوغیرہا

 



Total Pages: 604

Go To
$footer_html