$header_html

Book Name:Jame Ul Ahadees Jild 1

        مرسل  خفی اورمدلس کے درمیان فرق یوں ہے کہ راوی  کی مروی  عنہ  سے معاصرت ہوتی ہے  اور ملاقات بھی ممکن لیکن  سماع ثابت نہیں ہوتا ۔ برخلاف مدلس کہ اس میں  تینوں چیزیں ہوتی  ہیں۔

 مثال:۔   حدثنا محمد بن الصباح، انبأنا عبد العزیز بن محمد  عن صالح بن محمد بن زائدۃ، عن عمر  بن عبد العزیز عن عقبۃ بن عامر الجھنی قال : قال  رسول اللہ صلی اللہ تعالی علیہ وسلم: رحم اللہ  حارس الحرس۔  (۶۷)

        حضرت  عقبہ  بن عامر سے  روایت  ہے کہ رسول اللہ   صلی اللہ تعالیٰ   علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا: اللہ تعالیٰ مجاہدین  کے  محافظین  پر رحم  فرمائے۔

       عمر  بن عبد العزیز رضی اللہ تعالیٰ عنہ کی حضرت  عقبہ  سے  معاصرت تو ثابت ہے لیکن   ملاقات نہیں جیسا کہ  مزی  نے اطراف الحدیث میں ذکر کیا ۔

 حکم:۔  ضعیف ہے اس لئے کہ اس میں انقطاع  ہو تا ہے۔

تصنیف  فن

 ٭      کتاب التفصیل لمبہم المراسیل للخطیب۔

        یہ  اس فن  میں نہایت مشہور کتاب  ہے ۔

 معنعن  و مؤنن

 تعریف:۔ لفظ ’عن‘  کے  ذریعہ روایت   معنعن ہے ، اور’  ان‘  کے ذریعہ روایت مؤنن ہے۔

 حکم:۔ چند شرائط کے  ساتھ  متصل  شمار  ی جاتی ہے ۔

 ٭    راوی  مدلس نہ ہو۔

 ٭    جن  راویوں  کے درمیان ’ عن ‘ یا ’ان‘ آئے وہ ہم  عصر ہو ں۔

 مردود  بسبب طعن در راوی

        راوی   میں طعن کا مطلب یہ ہوتا ہے کہ اسکی عدالت  یعنی  مذہب  و کر دار، اور ضبط و حفظ کے بارے میں 



Total Pages: 604

Go To
$footer_html