Book Name:Jame Ul Ahadees Jild 1

        حضور نبی کریم  صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم مکہ مکرمہ میںداخل  ہوئے تو آپکے مبارک  سر پر  خود تھا۔ اس حدیث کو امام زہری سے صرف امام مالک نے روایت کیا۔(۳۰)

حکم:۔ ان احادیث کا حکم بھی  مشہور احادیث کی طرح ہے کہ ہر حدیث کا صحیح اور معتمد ہونا

ضروری نہیں بلکہ حسب موقع مختلف مراتب ہو تے ہیں۔

 بلکہ غرائب پر  اکثر جرح ہی  ہو تی ہے۔

        مندرجہ  ذیل کتب میں اکثر  و بیشتر احادیث  غرائب مذکورہیں۔

       المسند للبزار                         م  ۲۹۲ھ

        المعجم الاوسط للطبرانی             م  ۳۶۰ھ

    تضانیف فن

  ٭    غرائب  مالک للدار قطنی                           م  ۳۸۵

 ٭     الا فراد للدارقطنی

 ٭     السنن التی تفرد بکل  سنۃ منہا اہل بلدۃ لا بی  داؤد        م۲۷۵

 غریب لغوی

 تعریف:۔ متن  حدیث میں کوئی  ایسا لفط آجائے جو قلیل  الاستعمال ہونے کی وجہ سے غیر 

ظاہر ہو۔

       یہ فن   نہایت عظیم ہے، اس میںنہایت احتیاط اور تحقیق کی ضرورت  پیش آتی ہے،  کیونکہ معاملہ کلام نبوی  کی شرح و تفسیر کا ہے ،  لہذا کلام الہی کی  طرح حضور نبی کریم  صلی اللہ تعالیٰ   علیہ  وسلم کے کلام کی تشریخ و تفسیر بھی محض رائے سے مذموم قرار  دی جائے گی۔  حضرت امام احمد  بن حنبل رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے کسی  لفظ  غریب کے بارے میں  سوال ہو ا تو فرمایا: اس  فن   کے لوگوں  سے پوچھو،  مجھے  خوف ہے کہ کہیں میں  اپنے ظن و تخمین سے کوئی  بات کہہ دوں اور غلطی میں  مبتلا ہو جاؤں۔

        امام ابو  سعید اصمعی  سے ابو قلابہ نے پوچھاحضور نبی کریم   صلی اللہ تعالی علیہ وسلم کے فرمان ’’الجار  احق



Total Pages: 604

Go To