$header_html

Book Name:Jame Ul Ahadees Jild 1

متواتر استدلالی کی مثال:۔ اجماع ،خبر واحد اور قیاس کا حجت شرعی ہونا ایسے دلائل  سے

ثابت ہے جو شمار میںلا  تعداد ہیں اور مختلف مواقع پر مذکورہیں،  یہ الگ ا لگ تو اگر چہ ظنی ہیں مگر ان کا حاصل  ایک ہے۔ 

حکم۔ حدیث متواتر علم قطعی یقینی  بدیہی کا فائدہ دیتی ہے، راویوں سے  بحث نہیں کی جاتی،  اسکے

مضمون کا انکار کفر ہے۔

 تصنیفات فن

       اس نوعیت کی  متعدد  تصانیف معرض  وجود میں   آئیں۔ بعض حسب ذیل ہیں۔

۱۔      الفوائد المتکاثرۃ فی الاخبار المتواترۃ للسیوطی،

۲۔      الازہار المتناثرۃ فی الاخبار المتواترۃ للسیوطی،

۳۔      قطف الازہار للسیوطی،

۴۔      نظم المتناثر من الحدیث المتواتر للکتانی،

۵۔     اتحاف ذوی الفضائل  المشتہرۃ بما  وقع من  الزبادات فی نظم المتناثر علی الازہار المتنا ثرۃ لا بی الفضل  عبد اللہ  صدیق۔

 تعریف خبر واحد:۔ وہ حدیث   جو تواتر کی حد کو نہ پہونچے۔

 حکم:۔ ظن غالب کا افادہ کر تی ہے،  اور اس سے حاصل شدہ علم نظری ہو تا ہے۔

                     اسکی دو  قسمیں ہیں  :۔

              با عتبار نقل           با عتبار قوت وضعف

       باعتبار نقل   یعنی  ہم تک پہونچنے کے اعتبار سے اسکی  تین قسمیں ہیں :۔

               Xمشہور      X عزیز                Xغریب

       خبر مشہور

 تعریف:۔ ہر طبقہ میں  جسکے راوی  تین   یازائد ہوں بشرطیکہ حد تواتر کو نہ    پہونچیں، اسکو

 



Total Pages: 604

Go To
$footer_html