Book Name:Jame Ul Ahadees Jild 1

حضرت نے پانچ لفظی تنقیصی جملے کے بدلے بفضلہ تعالیٰ چھہ جلدیں قلم بند فرمادیں۔

       اعلیٰ حضرت قدس سرہ کی حدیث دانی کی تنقیص کے جواب میں صرف یہ دعوی بھی کافی ہوتا کہ امام احمد رضا  رحمۃ اللہ علیہ کو حدیث کی سند علم حدیث میں ہندوستان میںسب سے بڑے خانوادے سے عطا ہوئی  تھی۔ یعنی شاہ عبد العزیز محدث دہلوی قدس سرہ کی عطا کی ہوئی سند حدیث امام اہل سنت کو اپنے پیر و مرشد حضرت خاتم الاکابر سید شاہ آل  رسول  احمدی مارہروی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کے مبارک وسیلہ سے ملی۔ لیکن دعوی بہر حال دلیل کا محتاج ہوتا ہے اور امام اہل سنت قدس سرہ کے علم حدیث پر دلیل کی یہ  چھہ روشن شمعیں امام اہل سنت کے چاہنے والوں کی علمی محفلوںمیں  انشاء اللہ رہتی  دنیا تک اجالا پھیلاتی رہیں گی۔ یہ فقیر قادری دعا گوہے کہ راہ بھٹکے حاسد ین کے لئے یہ شمعیں

اند ھیرے راستے کی مشعلیں بن جائیں  تاکہ وہ بھٹکے ہوئے سیدھے راستے پر آسکیں ۔

       جدید علوم کی دنیا میں جب کسی اہم موضوع پر کام کیا  جاتا ہے تو باقاعدہ  پروجیکٹ بنتاہے۔ اس میں صرف ہونے والے اخراجات کا تخمینہ تیار ہوتا ہے۔ کئی اصحاب علم پر مشتمل ٹیم بنائی جاتی ہے۔ وقت مقرر کیا جاتا ہے ۔ حوالے کی کتابوں  کا انبار لگایا جاتا ہے ۔سکون کے ساتھ تصنیفی کام کرنے کے لئے ایر کنڈیشن کمرے فراہم ہوتے ہیں۔  ان تکلفات کے بعد تب اکثر وقت معین کے بعد ایک کتاب منصہ شہود پر آتی ہے۔علامہ محمد حنیف خا ں رضوی برکاتی پر صد  ہزار آفریں کہ انہوں نے اکیلی جان پر اتناعظیم الشان تحقیقی و تصنیفی کارنامہ انجام دیا۔ سبحان اللہ و ماشاا للہ۔

       اس فقیر برکاتی نے ایک بار والد گرامی حضور احسن العلماء قدس سرہ سے عرض کیا کہ ہمارے اکابر علماء کرام کتنی ضخیم اور مفید کتابیں لکھتے ہیں  ، اگر کسی یونیورسٹی میں وہ کتاب داخل کر دیں تو انہیں

 پی۔ ایچ۔ ڈی ۔کی ڈگری مل سکتی  ہے۔ والدگرامی نے ارشاد فرمایا کہ ہمارے اکابر علماء کرام تو اپنی ذات میں چلتی پھرتی یونیورسٹیاں ہیں انہیں ڈگریوں سے کیا غرض۔ یہ تو محبت مصطفی صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم میں  مسرور ہیں اور اسی سرور کو اپنے  لئے کافی سمجھتے ہیں ۔

       امام اعظم حضرت ابو حنیفہ، حضرت امام شافعی ، حضرت امام غزالی اور  بعد  کے  محدثین میں حضرت محدث سورتی   رضوان اللہ  تعالیٰ علیہم اجمعین کی حدیث دانی پر بھی ماضی میں بہت حملے کئے  گئے اور ارباب علم نے انکے منھ توڑ جواب دیئے، لیکن امام احمد رضا کے علم حدیث پر  حملے کے جواب  میں  علامہ محمد حنیف صاحب مد ظلہ 



Total Pages: 604

Go To