Book Name:Jame Ul Ahadees Jild 1

۹۔      مقدمہ  ابن صلاح،                              ۱۴۱ 

۱۰۔      الجامع  الصحیح  للبخاری،             کتاب اللباس، 

       قاضی مصر ابن لہیعہ نے اسکو یوں روایت کردیا ۔

       احتجم فی المسجد ۔

        حضور نبی کریم صلی اللہ  تعالیٰ علیہ وسلم نے مسجد میں فصد کھلوائی ۔

       امام ابن صلاح اس غلطی کی وجہ بیان کرتے  ہوئے لکھتے ہیں ۔

       اخذہ من کتاب بغیرسماع۔ (۱۱)

       ابن لہیعہ نے شیخ سے سماعت کئے بغیر کتاب سے دیکھکر روایت کردیا ۔

       حدیث شریف میں ہے ۔

       ان النبی صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم نھی عن تشقیق الخطب۔ (۱۲)

       حضور نبی کریم صلی اللہ  تعالیٰ علیہ وسلم نے وعظ وتقریر میں نفاظی اور بناوٹی انداز سے منع فرمایا۔

       دوسری حدیث یوں مروی ہے ۔

       لعن رسول اللہ صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم الذین یشققون الخطب تشقیق الشعر۔ (۱۳)

       رسول اللہ صلی اللہ  تعالیٰ علیہ وسلم نے وعظ وتقریر میں بتکلف شعروشاعری کی طرح قافیہ بندی کرنے والوں کو ملعون فرمایا ۔

       اب لطیفہ ملاحظہ کریں :۔

       اس حدیث کوایک بیان کرنے والے مقرر نے مسجد جامع منصور میں اس طرح پڑھا ،

       نھی عن تشقیق الحطب ۔

        حضور نے لکڑیاں چیرنے سے منع فرمایا۔

       اتفاق سے مجلس میں ملاحوں کی ایک جماعت بھی تھی ،بولے

       فکیف نعمل والحاجۃ ماسۃ۔ (۱۴)

        ہم کشتیاں کیسے بنائیں کہ اسکے لئے تو لکڑی چیرنے کی ضرورت پڑتی ہے ۔

       ان بیچاروں کا روزگار ہی کشتی چلانے پرتھا توانکی تشویش بجا تھی ،امام ابن صلاح نے

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

 



Total Pages: 604

Go To