Book Name:Jame Ul Ahadees Jild 1

        پھر حضور اقدس  صلی اللہ  تعالیٰ علیہ وسلم نے نیزہ کی طرف رخ کرکے دورکعت نمازپڑھائی۔

       اب سنئے۔

       عرب کے ایک قبیلہ کانام ’عنزہ ‘تھا ،اسکے ایک فرد ابوموسی عنزی بیان کرتے تھے کہ

ہماری قوم کو بڑا شرف حاصل ہے کہ حضور نے ہمارے قبیلہ کی طرف منہ کرکے نماز پڑھی ہے۔(۵)

       غالبا انکی اسی طرح کی غفلتوں کے پیش نظر امام ذھلی نے فرمایا ۔

       فی عقلہ شی۔( ۶)

       انکی عقل میں کچھ فتور تھا ۔

       دوسری وجہ یہ بھی ہوسکتی ہے جوامام ابن حبان نے بیان کی ۔

       کان لا یقرء الامن کتابہ۔ (۷)

       احادیث ہمیشہ کتاب سے پڑھنے کے عادی تھے ۔

       نیزامام نسائی فرماتے ہیں ۔

       کان یغیر فی کتابہ۔( ۸)

        اپنی کتاب میں تغیر سے بھی کام لیتے تھے ۔

       حدیث شریف میں ہے :۔

       ان رسول اللہ صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم احتجر فی المسجد۔ (۹)

       کہ رسول اللہ صلی اللہ  تعالیٰ علیہ وسلم نے مسجد نبوی میں چٹائی سے آڑ کی ۔

       اسی معنی کی روایت بخاری شریف میں یوں ہے ۔

       کان یحتجرحصیرا باللیل فیصلی ویبسطہ بالنہار فیجلس علیہ۔ (۱۰)

        حضور نبی کریم صلی اللہ  تعالیٰ علیہ وسلم شب  میں ایک چٹائی سے آڑکرکے نماز پڑھتے اوردن میں اسکو بچھاکراس پر تشریف فرماہوتے ۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۵۔      مقدمہ  بن  صلاح،                                ۱۴۲

۶۔      میز ان الاعتدال،  للذہبی،                        ۴ /۲۴

۷۔      میزان الاعتدال  للذہبی،                          ۴/۲۴

 ۸۔       میزان الاعتدال،  للذہبی،                       ۴/۲۴

 



Total Pages: 604

Go To