$header_html

Book Name:Jame Ul Ahadees Jild 1

خدا وند قدوس نے اپنی اطاعت کے ساتھ اپنے آخری رسول   صلی اللہ  تعالیٰ علیہ وسلم کی اطاعت کاحکم دیا اور ہر مسلمان کو اس پر عمل پیرا ہو نے کی بدولت سعادت دارین

اورفلاح ونجات اخروی کا مژدہ سنایا ۔

       اہل اسلام کی اولین جماعت صحابہ کرام رضوان اللہ تعالیٰ علیہم اجمعین نے یہ فرمان واجب   الاذعان براہ راست حضور اقدس   صلی اللہ  تعالیٰ علیہ وسلم سے سنا تھا ، لہذا شب وروز اپنے محسن اعظم اور ہادی برحق کے اشاروں کے منتظر رہتے ،اقوال وافعال میں اپنے لئے نمونہ عمل تلاش کرتے ،زیادہ وقت درباررسول کی حاضری میں گذراتے اور آپکی سیرت وکردار کو اپنا نا ہرفرض سے اہم فرض سمجھتے تھے ۔ انکی نشست وبرخاست ،خلوت وجلوت ،سفروحضر ،عبادات ومعاملات اورموت وحیات کے مراحل سب سنت رسول کی روشنی ہی میں  گذرتے اور انجام

پاتے۔ احادیث کی حفاظت کا انتظام اس طرح انہوں نے روزاول ہی سے شروع کردیا تھا ۔

       صحابہ کرام نے حضور اقدس   صلی اللہ  تعالیٰ علیہ وسلم سے یہ تعلیم بھی پائی تھی کہ اسلام میں رہبانیت نہیں، لہذامیری سنت اور اسوئہ حسنہ میں اپنے لئے نمونہ ٔعمل تلاش کرو ،(ترک دنیا کرکے بیوی بچوں اوروالدین کو بے سہارا چھوڑ دینا اوردیگر اعزہ واقرباء سے کنارہ کشی اختیار کرلینا مستحسن نہیں ) اس چیز پر حضور اکرم نے صحابہ کرام کو ایک موقع پر نہایت تاکیدی انداز سے متنبہ بھی کیا تھا ،کہ تم پر تمہارابھی حق ہے اورتمہارے والدین اوربیوی بچوں کا بھی ۔ لہذاروزہ رکھو توافطار بھی کرو، عبادت کرو تو آرام بھی کرو الخ کہ یہ سب میری سنت ہیں ۔گویا حضور نے اپنی امت کیلئے عمومی قانون یہ ہی بنایا کہ دنیا  نہ چھوڑیں بلکہ دنیاکو اس انداز سے اختیار کریں کہ وہ دین بن جائے اوریہ اسی وقت متصو رہے جب حضور کے اسوئہ حسنہ پر عمل ہو ۔البتہ بعض

لوگوں کیلئے معاملہ برعکس تھا جس پر حضور نے کبھی انکار نہ فرمایا ۔

 صحابہ کرام نے شب و روزدر رسول پر  حاضر رہ کر حدیث و سنت کو محفوظ کیا

       صحابہ کرام بسااوقات دن میں تجارت اورکھیتی باڑی میں مشغول رہتے تھے ، لہذا جنکو روزانہ حاضری کا موقع نصیب نہ ہو تا تو وہ اس دن حاضر رہنے والے حضرات سے کسی جدید طرز عمل اوراس دن کی مکمل کارکرگی سے واقف ہونے کیلئے بے چین رہتے ۔بعض دیوانۂ  عشق ومحبت  وہ بھی تھے جنہوں نے خانگی الجھنوں سے سبکدوشی بلکہ کنارہ کشی اختیار کرکے آخر وقت تک کیلئے یہ عہد وپیمان کرلیا تھا کہ اب اس درکو چھوڑ کر نہ جائینگے ،اصحاب صفہ



Total Pages: 604

Go To
$footer_html