$header_html

Book Name:Jame Ul Ahadees Jild 1

نہیں پڑتا ،کیونکہ متعارض احادیث میں عمل کی ترتیب یوں قائم کی گئی ہے ۔

       پہلے یہ دیکھا جائے گا کہ کیا ایک دوسرے کیلئے ناسخ ہوسکتی ہے ،اگر ہے توناسخ پر عمل

ہوگا منسوخ کو چھوڑدیا جائیگا ۔

        بعض وجوہ نسخ یہ ہیں ۔

 ۱۔    خود شارع نسخ کی وضاحت فرمائے۔

 ۲۔    باعتبار زمانہ تقدم وتاخر ہو ۔

       اگر نسخ کا علم نہ ہوسکے توترجیح کی صورتوں میں سے کسی کو اختیار کرینگے ۔

       بعض وجوہ ترجیح باعتبار متن یوں ہیں ۔

 ۱۔    حرمت کواباحت  پر ترجیح ہوگی ۔

 ۲۔    قول عام ہو اور فعل خصوصیت یاعذر کااحتمال رکھتاہو تو قول کو فعل پر ترجیح ہوگی ۔

 ۳۔    حکم معلول کو حکم غیر معلول پر ترجیح ہوگی ۔

 ۴۔   مفہوم شرعی  کو مفہوم لغوی پرترجیح ہوگی ۔

 ۵۔    شارع کا بیان وتفسیر غیر کے بیان وتشریح پر راجح ہوگا ۔

 ۶۔    قوی دلیل ضعیف پر راجح ہوگی ۔

 ۷۔    نفی اگر مستقل دلیل کی بنیاد پر نہ ہو بلکہ اصل حال وحکم کی رعایت میں ہوتو اثبات کو نفی پر

ترجیح ہوگی ۔

        بعض وجوہ ترجیح باعتبار سند ۔

 ۱۔   کسی سند کے راوی متعدد ہوں تو اسکو ایک راوی کی سند پر ترجیح حاصل ہوگی ۔

 ۲۔   قوی سند ضعیف پرراجح ہوگی ۔

 ۳۔    سند عالی سند نازل پرراجح قراردی جائیگی بشرطیکہ دونوں کے رواۃ ضبط میں ہم پلہ

ہوں ۔

 ۴۔    فقاہت میں فائق راوی غیر فقیہ رواۃ پرخواہ یہ سند عالی ہو راجح قرار پائینگے ۔

 



Total Pages: 604

Go To
$footer_html