Book Name:Mahboob e Attar ki 122 Hikayaat

تاجدار سنتوں پر کافی مضبوطی کے ساتھ عمل کرتے تھے ، بار بار رغبت دلاتے کہ جب بھی تمہیں کوئی سنّت نظر آئے یا سنّت پر عمل کرنے کا کوئی آلہ نظر آئے یاجس چیز کے ذریعے تمہیں مَدَنی انعامات پر عمل نصیب ہوجائے تو اس کو دیکھ کر خوشی کا اظہار کرو اور سُبْحٰنَ اللہ!مَاشَاءَ اللہ!مرحبا !کی صدائیں بلند کرو کہسُبْحٰنَ اللہ  اس کے ذریعے مَدَنی انعامات پر عمل کریں گے اس کے ذریعے سنّت پر عمل کریں گے اور ہمیں اِنْ شَآءَ اللہ عَزَّ  وَجَلَّاس کا ثواب ملے گا ۔ یوں وہ اپنے رُفَقاء کا مَدَنی انعامات پر عمل کا جذبہ بڑھایا کرتے تھے ۔

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !                                                                                                                                                      صلَّی اللہُ تعالٰی علٰی محمَّد

(۵۹)مَدَنی انعامات کے لئے انفِرادی کوشش

          جامِعاتُ المدینہ عطاری کابینات ( بابُ المدینہ کراچی )کے ذمّے دار مَدَنی اسلامی بھائی سیِّد محمد ساجِد عطاری کا بیان ہے: اَلْحَمْدُللّٰہعَزَّوَجَلَّ! میں دَورِ طالِبِ علمی سے ہی’’ مَدَنی اِنعامات کی مجلس‘‘ میں بطورِ رُکْن شامل تھا اور حاجی زم زم رضا عطاری عَلَیْہِ رَحمَۃُ اللہِ الباری کی شفقتیں نصیب ہوتی رہتیں۔ جب میں فارغُ التَّحصیل ہوا تو مجھے جامِعاتُ المدینہ میں مختلف تنظیمی ذمّے داریاں دی گئیں ، جن کی بجاآوری میں مصروف ہوگیا اور مَدَنی انعامات کی مجلس میں خدمت کا سلسلہ موقوف ہوگیا ۔ جب حاجی زم زم رضا عطاری عَلَیْہِ رَحمَۃُ اللہِ الباری کا پہلا آپریشن ہوا اور کچھ دن اَسپتال رہنے کے بعد عالمی مَدَنی مرکز فیضانِ مدینہ بابُ المدینہ کراچی میں ہمارے

 



Total Pages: 208

Go To