Book Name:Mahboob e Attar ki 122 Hikayaat

(۳۶) پاؤں پکڑکرمُعافی مانگی

          مبلغِ دعوتِ اسلامی ورُکنِ شوریٰ، ابُو الْقافِلہ سید محمد لقمان عطاری مدظلہ العالی کا کچھ یوں بیان ہے: ایک اسلامی بھائی نے مجھے بتایا کہ ایک مرتبہ محبوبِ عطار حاجی زم زم رضا عطاری عَلَیْہِ رَحمَۃُ اللہِ الباری کا پاؤں میرے پاؤں پر آگیا ،میں نے ذرا بھی بُرا محسوس نہیں کیا تھا مگر یہ حقوقُ العباد کے بارے میں اتنے حُسّاس تھے کہ فوراً آگے بڑھے اور میرے پاؤں پکڑکر مجھ سے معافی مانگنے لگے ۔ اللہ     عَزَّوَجَلَّ کی اُن پر رَحمت ہو اور ان کے صَدقے ہماری بے حساب مغفِرت ہو۔  امین بِجاہِ النَّبِیِّ الْاَمین صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وسلَّم

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !                                                                                                      صلَّی اللہُ تعالٰی علٰی محمَّد

(۳۷)شَکَر رَنجی کے بعد معذِرت کی

          دعوتِ اسلامی کے اشاعتی ادارے مکتبۃ المدینہ کے ایک ذمّے دار اسلامی بھائی کا بیان ہے کہ10جون 2012کو میری حاجی زم زم رضا عطاری عَلَیْہِ رَحمَۃُ اللہِ الباری سے کسی کام کے سلسلے میں فون پر بات ہوئی ، دورانِ گفتگو تھوڑی سی شکررنجی ہوگئی تو کچھ ہی دیر بعد ان کا فون دوبارہ تشریف لایا اور بڑی عاجِزی کے ساتھ معذِرت طلب کرنے لگے کہ میری کسی بات سے آپ کا دل دکھ گیاہو تو مجھے مُعاف کر دیجئے ۔ اللہ     عَزَّوَجَلَّ کی اُن پر رَحمت ہو اور ان کے صَدقے ہماری بے

 



Total Pages: 208

Go To