Book Name:Mahboob e Attar ki 122 Hikayaat

بیٹھ گیا ، وہاں شیخِ طریقت ، امیرِ اہلسنّت دامت برکاتہم العالیہ کا رسالہ ’’قسم کے بارے میں مَدَنی پھول ‘‘ رکھا تھا ،ساتھ ہی پین اور ہائی لائٹر(Highlighterیعنی نشان زد کرنے والا قلم)بھی موجود تھا۔ بعدِ اجازت جب میں نے اس رسالے کی ورق گردانی کی تو میری حیرت کی انتہا نہ رہی کہ شدید کمزوری کی حالت میں بھی حاجی زم زم رضاعطاری عَلَیْہِ رَحمَۃُ اللہِ البارینے اس رسالے کو بغور پڑھا تھا اور جگہ جگہ عبارتیں نشان زَد کی ہوئی تھیں اوربعض مقامات پر پین سے اَطراف میں حاشیہ بھی لکھا ہوا تھا ۔ اس پر میں ان سے مزید متأثر ہوا،اللہ تعالیٰ حاجی زم زم رضاعطاری عَلَیْہِ رَحمَۃُ اللہِ الباری کے علم وعمل اور اطاعتِ مُرشِد و اطاعتِ مَدَنی مرکز کے جذبے میں سے مجھے بھی حصہ عطا فرمائے۔اٰمِین بِجاہِ النَّبِیِّ الْامین صلَّی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّم

اللہ     عَزَّوَجَلَّ کی اُن پر رَحمت ہو اور ان کے صَدقے ہماری بے حساب مغفِرت ہو۔  امین بِجاہِ النَّبِیِّ الْاَمین صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وسلَّم

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !                                                                                                      صلَّی اللہُ تعالٰی علٰی محمَّد

(۲۱) نئی کُتُب ورسائل شائع ہونے پر بہت خوش ہوتے

          مجلس مکتبۃ المدینہ کے ذمّہ دارحاجی فیاض عطاری کا بیان ہے کہ جب کبھی مکتبۃ المدینہ سے شیخِ طریقت  امیرِاہلسنّت دامت برکاتہم العالیہکی نئی کتاب یا رسالہ شائِع ہونے کی ان کو خبر ملتی تو بہت زیادہ خوش ہوتے اور پہلی فرصت میں اسے حاصل کرنے کی تگ ودو کیاکرتے ۔جب یہ اپنی زندگی کے آخری رمضان المبارک

 



Total Pages: 208

Go To