Book Name:Mahboob e Attar ki 122 Hikayaat

دومَدَنی بہاریں پیش کرتا ہوں۔

(۱) میں نے گناہوں سے توبہ کر لی

          واہ کینٹ (پنجاب )کے اسلامی بھائی کے بیان کا لب لباب ہے کہ بہت سے نوجوانوں کی طرح میں بھی متعدد اَخلاقی برائیوں میں مبتلا تھا ۔فلمیں ڈرامے دیکھنا،کھیل کُود میں وَقْت برباد کرنا میرا محبوب مشغلہ تھا۔گھر میں مدنی چینل چلنے کی برکت سے مدنی مذاکرہ دیکھنے کی سعادت نصیب ہوئی، اَلْحَمْدُ للّٰہعَزَّوَجَلَّ!پچھلے گناہوں سے تائب ہو کر فرائض وواجبات کا عامِل بننے کے لئے کوشاں ہوں ، چہرے پرایک مٹھی داڑھی مبارکہ سجالی ہے اور مدنی حلیہ بھی اپنا لیاہے،اللہ عَزَّوَجَلَّ  کامزید کرم یہ ہوا ہے کہ والدین نے بخوشی مجھے’’ وقفِ مدینہ‘‘ کر دیا ہے۔

(۲) 200مَدَنی مذاکرے

          پشاور سے ایک اسلامی بہن کا بیان کچھ یوں ہے:اَلْحَمْدُللّٰہعَزَّوَجَلَّ! تادمِ تحریرمجھے مَدَنی مذاکرے کے کم وبیش200سلسلے دیکھنے کی سعادت ملی ہے، جن میں بیان کئے جانے والے بعض مَدَنی پھول میں نے نوٹ بھی کئے ہیں۔ مدنی مذاکروں کی برکت سے میرے دل میں مدنی انقلاب برپا ہو گیااور گھر میں بھی مدنی ماحول قائم ہو گیا ہے، اِجتماعات میں پابندی سے شریک ہونے اور مدنی انعامات کا رسالہ پُر کر کے ہر مدنی ماہ کے پہلے دس دن کے اندر اندر جمع کرانے کا جذبہ بیدار ہوا، مزید کرم یہ ہوا کہ میرے والد محترم دعوت اسلامی کے مدنی ماحول سے وابستہ ہو کر

 



Total Pages: 208

Go To