Book Name:Mahboob e Attar ki 122 Hikayaat

(۱۲۲)ڈاکوؤں سے حفاظت

        میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو! نیکی کی دعوت کا جذبہ پانے، سنّتوں پرعمل کرنے ، نیکیوں کاثواب کمانے ، دل میں عشقِ رسول کی شمع جلانے کیلئے تبلیغِ قراٰن و سنّت کی عالمگیر غیر سیاسی تحریک، دعوتِ اسلامی  کے مَدَنی ماحول سے ہر دم وابَستہ رہئے، اپنے ایمان کی حفاظت کیلئے کڑھتے رہئے ، نَمازوں کی پابندی جاری رکھئے، سنّتوں پر عمل کرتے رہئے،مَدَنی اِنعامات کے مطابِق زندَگی گزاریئے اور اِس پر استِقامت پانے کیلئے ہر روز’’ فکرِ مدینہ‘‘ کر کے مَدَنی اِنعامات کا رسالہ پُر کرتے رہئے اور ہر مَدَنی ماہ کی ابتِدائی دس تاریخ کے اندر اندر اپنے یہاں کے دعوتِ اسلامی کے ذِمّے دار کو جمع کروادیجئے اور اپنے اِس مَدَنی مقصد ’’ مجھے اپنی اور ساری دنیا کے لوگوں کی اِصلاح کی کوشِش کرنی ہے ‘‘ کے حُصول کی خاطرپابندی سے ہرماہ کم از کم تین دن کے سنّتوں کی تربیت کے مَدَنی قافِلے میں عاشقانِ رسول کے ہمراہ سنّتوں بھرا سفر کیجئے ۔نیک بندوں سے لوگ مَحَبَّت کرتے ہیں یہاں تک کہ بسا اوقات ڈاکو بھی نیک بندوں کا احترام کرتے ہوئے انہیں لُوٹنے سے باز رہتے ہیں ، ایسی ہی ایک مَدَنی بہار ملاحظہ کیجئے:چنانچہ تاجدارِ مَدَنی انعامات مبلغِ دعوتِ اسلامی ورکن شوریٰ حاجی ابو جنید زم زم رضا عطاری علیہ رحمۃُ اللہِ الباریکا کچھ اِس طرح بیان ہے کہ ایک بار میں جیب میں کافی رقم لئے حیدرآباد( بابُ الاسلام سندھ پاکستان) سے بابُ المدینہ کراچی آنے کیلئے بس میں سُوار ہوا۔ بس ابھی بمشکل آدھا گھنٹہ چلی ہو گی کہ اچانک مختلف نِشَستوں سے چار پانچ افراد ایک دم اسلحہ (اَس۔لَ۔حہ) تان کر

 



Total Pages: 208

Go To