Book Name:Mahboob e Attar ki 122 Hikayaat

اللہ     عَزَّوَجَلَّ کی اُن پر رَحمت ہو اور ان کے صَدقے ہماری بے حساب مغفِرت ہو۔  امین بِجاہِ النَّبِیِّ الْاَمین صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وسلَّم

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !                                                      صلَّی اللہُ تعالٰی علٰی محمَّد

لوگوں کاشکر ادا کرنے کی اہمیت

          دافِعِ رنج و مَلال، صاحب ِجُودو نوال صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وسلَّم کا فرمانِ عالیشان ہے :جو لوگوں کا شکر ادا نہیں کرتا وہ اللہ عَزَّوَجَلَّ  کا شکرگزار نہیں ہو سکتا۔

(سنن ابی داؤد،کتاب الادب،باب فی شکر المعروف،ج۴، الحدیث:۴۸۱۱،ص۳۳۵)

            مُفَسِّرِشَہِیرحکیمُ الْاُمَّت حضر  ت ِ مفتی احمد یار خان علیہ رحمۃُ الحنّان اِس حدیثِ پاک کے تحت فرماتے ہیں : سُبْحٰنَ اللہ! کتنا عالی مقام ہے، بندوں کا ناشکرا رب کا بھی ناشکرا یقینا ہوتا ہے، بندہ کا شکریہ ہر طرح کا چاہیے؛دِلی، زبانی، عملی ،یوں ہی رب کا شکریہ بھی ہر قسم کا کرے، بندوں میں ماں باپ کا شکریہ اور ہے! استاد کا شکریہ کچھ اور !شیخ ، بادشاہ کا شکریہ کچھ اور!(مرأۃ المناجیح ،۴/۳۵۷)

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !                                                      صلَّی اللہُ تعالٰی علٰی محمَّد

(۶) سب سے پہلے والِدۂ محترمہ کی زیارت کرتے

          مبلغِ دعوتِ اسلامی محمد اجمل عطاری (مرکز الاولیاء لاہور) کا بیان ہے کہ محبوبِ عطّارحاجی زم زم رضاعطاری عَلَیْہِ رَحمَۃُ اللہِ الباری نے ایک بار مجھے بتایا : میری عادت ہے کہ گھرپہنچتے ہی سب سے پہلے والِدۂ محترمہ کی خدمت میں حاضِری دیتا ہوں ، انہیں

 



Total Pages: 208

Go To