Book Name:Mahboob e Attar ki 122 Hikayaat

ہے وہ جو کسی خَلَط کے غلبہ اس کے مناسبات نظر آتے ہیں مثلاً صَفراوی آگ دیکھے بَلغمی پانی۔دوسرا خواب القائے شیطان ہے اور وہ اکثر وحشتناک ہوتا ہے شیطان آدمی کو ڈراتا یا خواب میں اس کے ساتھ کھیلتا ہے اس کو فرمایا کہ کسی سے ذِکر نہ کرو کہ تمہیں ضرر نہ دے۔ ایسا خواب دیکھے تو بائیں طرف تین بار تھوک دے اور اعوذ پڑھے اور بہتر یہ ہے کہ وضو کرکے دو رکعت نفل پڑھے۔تیسرا خواب القائے فرشتہ ہوتا ہے اس سے گزشتہ و موجودہ و آئندہ غیب ظاہر ہوتے ہیں مگر اکثر پردۂ تاویلِ قریب یا بعید میں ولہٰذا محتاجِ تعبیر ہوتا ہے۔چوتھا خواب کہ ربّ العزّت بلاواسطہ اِلقاء فرمائے وہ صاف صریح ہوتا ہے اور احتیاجِ تعبیر سے بری ،وَاللہُ تَعَالٰی اَعْلَمُ۔

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !                                                                                                                                                      صلَّی اللہُ تعالٰی علٰی محمَّد

(۱۱۷)مزار شریف بنانے کا اعلان

          حاجی زم زم رضا عطاری عَلَیْہِ رَحمَۃُ اللہِ الباری کے تیجے میں بیان کرتے ہوئے امیراہلسنّت دامت برکاتہم العالیہ نے جب اس خواہِش کا اظہار کیا کہ حاجی مشتاق عطاری، مفتی فاروق عطاری مَدَنی اور حاجی زم زم رضاعطاری رحمۃُ اللہ تعالٰی علیہم کی قبروں پر مزار شریف کی عمارت تعمیر کردینی چاہئے کہ بزرگانِ دین کی قُبور پرایسا کرنااہلسنّت کا معمول بھی ہے اور زائرین کے لئے سَہولت کا سامان بھی ، لیکن دعوتِ اسلامی کے چندے سے یہ کام نہ کیا جائے بلکہ اس کے لئے الگ سے رقم جمع کی جائے یہ بیان مدنی چینل پربراہِ راست(LIVE)ٹیلی کاسٹ ہورہا تھا، عَرَب امارت


 

 



Total Pages: 208

Go To