Book Name:Mahboob e Attar ki 122 Hikayaat

جھوٹا خواب بیان کرنے والے کا انجام

          بِالفرض کوئی جھوٹا خواب گڑھ کر سناتا بھی ہے تواِس کا وہ خود ہی ذمّہ دار، سخت گنہگار اور عذابِ نار کا حقدارہے ،اللہ عَزَّوَجَلَّ کے مَحْبوب، دانائے غُیُوب، مُنَزَّہٌ عَنِ الْعُیُوب صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وسلَّم کا فرمانِ عبرت نشان ہے، ’’جو جھوٹا خواب بیان کرے اُسے بَروزِ قِیامت جَو کے دو دانوں میں گانٹھ لگانے کی تکلیف دی جائیگی اور وہ ہر گز گانٹھ نہیں لگاپائے گا۔‘‘(صحیح بخاری،۴/۴۲۲ حدیث ۷۰۴۲) البتہ خواب سنانے والے سے قَسم کا مطالبہ شرعاً واجِب نہیں اور جو مَعَاذَ اللہ عَزَّوَجَلَّ  جھوٹا ہوگا، ہو سکتا ہے وہ جھوٹی قسم بھی کھالے۔

خواب کی چار قسمیں

          میرے آقا اعلٰیحضرت،اِمامِ اَہلسنّت،  ولیٔ نِعمت،عظیمُ البَرَکت، عظیمُ المَرْتَبت،پروانۂِ شمعِ رِسالت،مُجَدِّدِ دین  ومِلَّت، حامیِٔ سنّت ، ماحِیِٔ بِدعت، عالِمِ شَرِیْعَت ، پیرِ طریقت،باعثِ خَیْر وبَرَکت، حضرتِ علّامہ مولیٰنا الحاج الحافِظ القاری شاہ امام اَحمد رضا خانعلیہ رحمۃُ الرَّحمٰن  فتاوٰی رضویہ جلد29صَفْحَہ87 پرفرماتے ہیں :خواب چار قسم ہے:ایک حدیثِ نفس کہ دن میں جو خیالات قلب(یعنی دل) پر غالب رہے جب سویا اور اس طرف سے حواس معطل ہوئے عالَمِ مثال بقدرِاستعداد منکشف ہوا انہیں تخیلات کی شکلیں سامنے آئیں یہ خواب مہمل و بے معنی ہے اور اس میں داخل


 

 



Total Pages: 208

Go To