Book Name:Mahboob e Attar ki 122 Hikayaat

کانگران ہے تو وہ یہ نہ دیکھے کہ میرانگرانِ حلقہ مُشاورت کیا کررہا ہے، وہ اپنے حلْقے میں آجارہا ہے یا نہیں ؟ اگر کوئی حلقہ نگران ہے تو وہ یہ نہ دیکھے کہ میرا عَلاقائی نگران کیا کررہا ہے؟ اِسی طرح اگر کوئی عَلاقائی نگران ہے توو ہ اپنے ڈویژن نگران کو نہ دیکھے کہ وہ جَدْوَل چلارہا ہے یا نہیں ؟ فُلاں عَلاقے یا حلقے میں یہ مسئلہ ہوگیا!اِدھر یہ ہوگیا اُدھر وہ ہو گیا!یاد رکھیے! اس بات کودیکھنا، اس کو چیک کرنا یہ ہماری ذمّے داری نہیں بلکہ ہمیں جو ذمّے داری دی گئی ہم سے اس کا حساب ہوگا لہٰذا اپنے کام میں لگے رہیں۔ہاں ! کسی جگہ دین کا نقصان ہوتا دیکھیں تو تنظیمی ترکیب کے مطابق مسئلہ حل کریں مگر ہر گز ایک دوسرے پر اظہار نہ کریں کہ نگران صاحب تو سنتے ہی نہیں یہ تو کسی کی مانتے ہی نہیں ! وغیرہ کہ اِس طرح غیبتوں ،تہمتوں اور بدگمانیوں کا دروازہ کُھل سکتا ہے ۔

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !                                                                                                                                                      صلَّی اللہُ تعالٰی علٰی محمَّد

(۹۲)جب محبوب عطار کو علاقائی نگران سے ذیلی نگران بنایا گیا

          حیدر آباد (باب الاسلام سندھ )کے اسلامی بھائی کا بیان ہے کہ بہت عرصہ پہلے کی بات ہے کہ حاجی زم زم رضا عطاری عَلَیْہِ رَحمَۃُ اللہِ الباری  ہمارے علاقائی نگران ہوا کرتے تھے ۔ اس وَقْت ہمارا علاقہ 125سے زائد مساجد پر مشتمل تھا۔ ایک مَدَنی مشورے میں تنظیمی ترکیب تبدیل ہوئی تو حاجی زم زم رضا عطاری عَلَیْہِ رَحمَۃُ اللہِ الباری کو صرف ایک مسجد کا ذیلی نگران بنادیا گیا ۔جب ہم مَدَنی مشورے سے واپس


 

 



Total Pages: 208

Go To