Book Name:Mahboob e Attar ki 122 Hikayaat

ذمّے دار اسلامی بھائی محمد صداقت عطّاری کا بیان کچھ اس طرح سے ہے کہ حیدر آباد میں ایک مرتبہ حاجی زَم زَم رضا عطاری علیہ رحمۃُ اللہِ الباریکے ہمراہ کہیں جانے کی سعادت حاصل ہوئی ،دورانِ سفر رِکشا ڈرائیور پر انفِرادی کوشش فرمائی اور اس کانام شیخِ طریقت امیراہلسنّت  دامت برکاتہم العالیہ سے مُرید کروانے کے لئے لے لیا ، پھر ڈرائیور نے کچھ مسائل بیان کئے، اس پر حاجی زم زم رضا عطاری علیہ رحمۃُ اللہِ البارینے انہیں مکتبۃ المدینہ کے مطبوعہ رسالے،’’ 40روحانی علاج‘‘ میں سے کچھ وظائف پڑھنے کے لئے دیئے اور ان کا فون نمبر بھی لے لیا۔ کچھ دنوں کے بعد جب حاجی زم زم رضا عطاری علیہ رحمۃُ اللہِ الباری نے ڈرائیور کو غم خواری کے لئے فون کیا تو ڈرائیور ان کے اس انداز سے بڑا متأثِّر ہوا اور اس نے کئی اچّھی اچّھی نیَّتیں بھی کیں۔ اللہ     عَزَّوَجَلَّ کی اُن پر رَحمت ہو اور ان کے صَدقے ہماری بے حساب مغفِرت ہو۔  امین بِجاہِ النَّبِیِّ الْاَمین صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وسلَّم

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !                                                                                                      صلَّی اللہُ تعالٰی علٰی محمَّد

(۹۰) بروَقْت حوصلہ افزائی

           مَدَنی چینل کے شعبے میں خدمات انجام دینے والے اسلامی بھائی غلام شبیر عطّاری کا بیان ہے کہ اَ لْحَمْدُللّٰہعَزَّوَجَلَّ! مجھے طویل عرصہ خُصُوصی یعنی گونگے بہر ے اسلامی بھائیوں کے شعبے میں مَدَنی کام کرنے کی سعادت حاصل رہی ہے ،یہ اُن دنوں کی بات ہے جب میں پاکستان انتظامی کابینہ میں شُعبۂ خصوصی اسلامی بھائی


 

 



Total Pages: 208

Go To