Book Name:Mahboob e Attar ki 122 Hikayaat

ضَرورتاًحاجی زَم زَم رضا عطاری علیہ رحمۃُ اللہِ الباری کی طرف بھیج دیا کرتا تھا ۔یہ نہ صرف ان کی پریشانی سنتے بلکہ اس کے حل کے لئے تعویذاتِ عطاریہ کی ترکیب بھی بناتے ۔ بعد میں اس اسلامی بھائی سے میری بات ہوتی تو وہ حاجی زم زم رضا عطاری علیہ رحمۃُ اللہِ الباری کے لئے بڑے اچّھے جذبات کا اظہار کرتے کہما شاء اللہ عَزَّوَجَلَّ  انہوں نے ہمارے ساتھ بہت تعاون کیا ہے ۔اللہ عَزَّوَجَلَّ کی اُن پر رَحمت ہو اور ان کے صَدقے ہماری بے حساب مغفِرت ہو۔ ٰ امین بِجاہِ النَّبِیِّ الْاَمینصَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وسلَّم

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !                                                      صلَّی اللہُ تعالٰی علٰی محمَّد

(۷۰)کینسر کے مریض کی عِیادت

          رکن شوریٰ حاجی ابو رضا محمد علی عطاری مدظلہ العالی کا بیان ہے کہ سردار آباد (فیصل آبادپاکستان )کے ایک اسلامی بھائی آصف عطاری کے دس سالہ بیٹے کو کینسر کا مَرَض تھا ۔حاجی زم زم رضا عطاری عَلَیْہِ رَحمَۃُ اللہِ الباری کے وصال کے بعد وہ اسلامی بھائی نہایت افسُردہ اور غمگین تھے اُن کے یہ تَأَثّرات تھے کہ حاجی زم زم رضا عطاری عَلَیْہِ رَحمَۃُ اللہِ الباری میری بہت ڈَھارس بندھاتے تھے،جب کبھی سردار آباد میں مَدَنی مشورے کے لئے تشریف لاتے تو مصروفیات کے باوُجُود میرے بیٹے کی عِیادت کے لئے تشریف لاتے ، اُسے دَم فرماتے ،اس کی صحت یابی کی دعا کرتے اور میری ہمّت بڑھاتے تھے ۔ اس کا ٹیسٹ ہونے سے پہلے اور بعد میں مجھ سے


 

 



Total Pages: 208

Go To