Book Name:Bughz-o-Keena

کے بڑے بڑے ہتھوڑوں سے اسے پِیٹا جائے گا۔اسی قسم کے بے شمار رَنج واَلم اور تکلیفوں سے بھرپورجگہ ہوگی جہاں دیگر گناہگاروں کے ساتھ ساتھ چغل خور اور کینہ پَرْوَر بھی جائیں گے ۔

ہم قَہرِ قَھّار اور غَضَبِ جبّار سے اُسی کی پناہ کے طلبگار ہیں ۔  

اٰمین بِجاہِ النَّبِیِّ الْاَمینصَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وسلَّم

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !                                   صلَّی اللہُ تعالٰی علٰی محمَّد

{2} بخشش نہیں ہوتی

          رسولِ نذیر ،  سِراجِ مُنیر، محبوبِ ربِّ قدیرصلَّی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّم کا فرمانِ عالیشان ہے: ہر پیر اور جمعرات کے دن لوگوں کے اعمال پیش کئے جاتے ہیں ،    پھر بُغْض وکینہ رکھنے والے دو بھائیوں کے علاوہ ہر مؤمن کو بخش دیا جاتا ہے اور کہا جاتا ہے: اُ تْرُکُوْا اَوِ ارْکُوْا ہٰذَیْنِ حَتّٰی یَفِیْئَا  ان دونوں کو چھوڑ دو یہاں تک کہ یہ اُس بُغْض سے واپس پلٹ آئیں ۔ (صحیح مسلم، کتاب البروالصلۃ ،  باب النھی عن الشحناء، ص۱۳۸۸، الحدیث۲۵۶۵)

           مسلمانوں کا کینہ اپنے سینہ میں پالنے والوں کے لئے رونے کا مقام ہے کہ خدائے رحمن کی طرف سے ہرپیراور جمعرات کو بخشش کے پروانے تقسیم ہوتے ہیں لیکن کینہ پَرْوَراپنی قلبی بیماری کی وجہ سے بخشے جانے والے خوش نصیبوں میں شامل ہونے سے محروم رہ جاتا ہے !

تجھے واسِطہ سارے نَبیوں کا مولیٰ

مِری بخش دے ہر خطا یاالٰہی

 (وسائل بخشش ص ۷۹)

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !                                   صلَّی اللہُ تعالٰی علٰی محمَّد

{3}  رحمت ومغفرت سے محرومی

          اللہ عَزَّوَجَلَّ کے مَحبوب،  دانائے غُیوب،  مُنَزَّہٌ عَنِ الْعُیوب  صلَّی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّم کا فرمانِ عالیشان ہے : اللہعَزَّوَجَلَّ (ماہِ) شعبان کی پندرہویں رات اپنے بندوں پر (اپنی قدرت کے شایانِ شان) تجلّی فرماتاہے ،  مغفرت چاہنے والوں کی مغفرت فرماتا ہے اور رحم طلب کرنے والوں پر رحم فرماتاہے جبکہ کینہ رکھنے والوں کو ان کی حالت پر چھوڑ دیتا ہے۔ (شعب الایمان،  باب فی الصیام،  ماجاء فی لیلۃ النصف من شعبان، ۳ / ۳۸۲، الحدیث: ۳۸۳۵)

نازُک فیصلوں کی رات

          میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو!اُمُّ الْمُؤمِنِین حضرتِ سَیِّدتُنا عائشہ صِدِّیقہرضی اﷲ تعالٰی عنہاسے مَروی فرمانِ مُصطَفٰیصلَّی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّم میں یہ بھی ہے کہ شعبان کی پندرہویں رات میں مرنے والوں کے نام اور لوگوں کا رِزق اور  (اِس سال)  حج کرنے والوں کے نام لکھے جاتے ہیں ۔ (تفسیرالدُرّالمَنثور، ۷ / ۴۰۲ ، سورۃ الدخان ، تحت الاٰیۃ: ۵)

          ذرا غور فرمائیے کہ پندرہ  شَعْبانُ الْمُعَظّمکی رات کتنی نازُک ہے!نہ جانے کس کی قِسْمت میں کیا لکھ دیا جائے!ایسی اہم رات میں بھی کینہ پَرْوَر بخشش ومغفرت کی خیرات سے محروم رہتا ہے ۔

بنادے مجھے نیک نیکوں کا صَدقہ

گناہوں سے ہردَم بچا یاالٰہی

 (وسائل بخشش ص ۷۸)

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !                                   صلَّی اللہُ تعالٰی علٰی محمَّد

{4} جنت کی خوشبو بھی نہ پائے گا

             حضرت سَیِّدُنافُضَیل بن عِیاض علیہ رحمۃاللہ الوھّاب نے خلیفہ ہارون رشید کو ایک مرتبہ نصیحت کرتے ہوئے فرمایا: ’’  اے حسین وجمیل چہرے والے! یاد رکھ!



Total Pages: 30

Go To