Book Name:Bughz-o-Keena

غم  (اورٹینشن ) میں اِضافہ اور حرص میں زیادَتی ہوگی (۲) تیرے اوپرظُلْم کرنے والے کے ظُلْم پر غور نہ کرکہ اِس سے تیرے دل میں کینہ بڑھے گااور غصّہ باقی رہے گا  (۳) دُنیا میں زِیادہ دیر زندہ رہنے کے بارے میں نہ سوچ کہ اس طرح تو مال جَمع کرنے میں اپنی عُمر ضائِع کردے گااور عمل کے مُعامَلے میں ٹا لَم ٹَول ( ٹالَمْ۔ ٹو ل )  سے کام لے گا۔ ‘‘ لہٰذا ہمیں چاہئے کہ دُنیوی تَفکُّرات  ( تَ ۔فَکْ ۔ کُرات) میں جان کَھپانے کے بجائے آخِرت کےکے مُعاملات میں اس طرح مُنہَمِک ہوجا ئیں جیسا کہ ہمارے اَسلاف رَحِمَہُمُ اللہُ تعالٰی کا مَدَنی انداز تھا۔ (خودکشی کا علاج ص ۵۰)

کریں نہ تنگ خیالاتِ بد کبھی ،  کردے

شُعُور و فکر کو پاکیزگی عطا یاربّ                    (وسائل بخشش ص ۹۳)

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !                                   صلَّی اللہُ تعالٰی علٰی محمَّد

  (۵) مسلمانوں سے اللہ کی رضا کے لئے محبت کیجئے

          محبت کینے کی ضد  (یعنی اُلٹ) ہے لہٰذا اگر ہم رضائے الٰہی کے لئے اپنے مسلمان بھائی سے محبت رکھیں تو کینے کو دل میں آنے کی جگہ نہیں ملے گی اور ہمیں دیگر فوائد وفضائل بھی حاصل ہوں گے ۔فرمانِ مصطَفٰے صلَّی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّم ہے: جو کوئی اپنے مسلمان بھائی کی طرف مَحَبَّت بھری نظر سے دیکھے اور اُس کے دل یا سینے میں عداوت نہ ہو تو نگاہ لَوٹنے سے پہلے دونوں کے پچھلے گناہ بخش دیئے جائیں گے ۔   (شعب الایمان،  ۵ / ۲۷۰، الحدیث۶۶۲۴)  

مِرے جس قَدَر ہیں اَحباب انہیں کردیں شاہ بیتاب

ملے عشق کا خزانہ مَدَنی مدینے والے             (وسائل بخشش ص۲۸۸ )

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !                                   صلَّی اللہُ تعالٰی علٰی محمَّد

  (۶) دُنیاوی چیزوں کی وجہ سے بُغْض وکینہ رکھنا عقل مندی نہیں

          کینے کی بنیاد عموماً دُنیاوی چیزیں ہوتی ہیں ، لیکن سوچنے کی بات ہے کہ کیا دُنیا کی وجہ سے اپنی آخرت برباد کرلینا دانشمندی ہے ؟  ایک سبق آموز روایت ملاحظہ کیجئے: چنانچہ حضرت سَیِّدُنا  عبداللہ بن عباس رضی اللہ تعالٰی عنہمانے ارشاد فرمایا:  ’’ بروزِقیامت دُنیاکوایک بد صورت نیلی آنکھوں والی بوڑھی عورت کے روپ میں لایا جائے گاجس کے  (ڈرا ؤنے )  دانت نظرآرہے ہوں گے اوروہ تمام انسانوں کے سامنے ہوجائے گی ،  اُن سے پوچھاجائے گا : ’’ کیا تم اس کو جانتے ہو؟  ‘‘ وہ جواب دیں گے : ’’ ہم اس کی پہچان سے اللہعَزَّوَجَلَّ  کی پناہ مانگتے ہیں ۔ ‘‘ توکہاجائے گا :  ’’ یہی وہ دُنیا ہے جسے حاصل کرنے کے لئے تم ایک دوسرے کا خون بہاتے تھے ،  اس کو پانے کے لئے قطع رحمی (یعنی رشتے داری توڑدیا)  کرتے تھے ، اس کی خاطرایک دوسرے پر غروراور حَسَدکرتے تھے اوراسی کے لئے ایک دوسرے سے بُغْض رکھتے تھے ۔ ‘‘ پھردُنیاکوبوڑھی عورت کے روپ میں جہنم میں ڈال دیاجائے گاتووہ کہے گی: ’’ یااللہعَزَّوَجَلَّ ! میرے چاہنے والے، میرے پیچھے آنے والے کہاں گئے ؟   ‘‘  تواللہعَزَّوَجَلَّ ارشاد فرمائے گا: ’’ اس کے پیچھے بھاگنے والوں اورچاہنے والوں کوبھی اس کے پاس ( جہنم میں )  پہنچا دو۔ ‘‘  (شعب الایمان للبیہقی۷ / ۳۸۳، حدیث: ۱۰۶۷۱)

 

نہ ہوں اشک برباد دُنیا کے غم میں

محمد کے غم میں رُلا یاالٰہی

 (وسائل بخشش ص ۷۷)

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !                                   صلَّی اللہُ تعالٰی علٰی محمَّد

اپنے بچوں کو بھی بُغْض وکینے سے بچائیے

          شہنشاہِ مدینہ ، قرارِ قلب وسینہصلَّی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّم کا فرمانِ عظمت نشان ہے : بے شک اللہتبارک وتعالیٰ پسند کرتا ہے کہ تم اپنی اولاد کے



Total Pages: 30

Go To