Book Name:Bughz-o-Keena

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !                                   صلَّی اللہُ تعالٰی علٰی محمَّد

 ’’ راہِ جنّت ‘‘ کے چھ حروف کی نسبت سے کینے کے6علاج

 (۱)   ایمان والوں کے کینے سے بچنے کی دعا کیجئے

            ہراسلامی بھائی کو چاہئے کہ ایمان والوں کے کینے سے بچنے کی دعا کرتا رہے ،   درجِ ذیل مختصرقرآنی دعا کو یاد کرلینا اوروقتاً فوقتاً پڑھنا بھی بہت مفید ہے ۔چنانچہ پارہ 28سورۂ حشر کی آیت 10میں ہے :

وَ لَا تَجْعَلْ فِیْ قُلُوْبِنَا غِلًّا لِّلَّذِیْنَ اٰمَنُوْا رَبَّنَاۤ اِنَّكَ رَءُوْفٌ رَّحِیْمٌ۠ (۱۰)

 ( ترجمہ کنزالایمان : اور ہمارے دل میں ایمان والوں کی طرف سے کینہ نہ رکھ اے رب ہمارے ! بیشک تو ہی نہایت مہربان رحم والا ہے ۔)

          دعا کے ساتھ ترجمہ پڑھنے کی حاجت نہیں ، ہاں! معنی پر ضرورنظر رکھئے۔

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !         صلَّی اللّٰہُ تعالٰی علٰی محمَّد

 (۲)   اسباب دور کیجئے

            بیماری جسمانی ہویا رُوحانی !اس کے کچھ نہ کچھ اَسباب ہوتے ہیں،  اگر ان اسباب کا سدِ باب کرلیا جائے تو بیماری سے چھٹکارا پانا آسان ہوجاتا ہے ۔لہٰذاکینے کے چندممکنہ اسباب اور ان کے خاتمے کا طریقہ عَرْض کرتا ہوں، چنانچہ

 (پہلا سبب)                                                      غصہ

            احیاء العلوم اور دیگر کئی کتب میں ہے کہ کینہ غصے کی کوکھ سے جنم لیتا ہے ۔وہ   اس طرح کہ جب کوئی شخص غصے سے مَغْلُوب ہوکر کسی کو نقصان پہنچاتا ہے تو سامنے والا بھی اپنا رَدِّعمل دیتا ہے۔ یوں مسلسل عمل اور رَدِّ عمل کے نتیجے میں دلوں میں بُغْض وکینہ اپنی جگہ بنالیتا ہے ۔اس لئے اگر غصے کو اللہ  تعالیٰ کی رضا کے لئے پی لیا جائے تو ثواب ملنے کے ساتھ ساتھ کینے کا بھی سَدِّ باب ہوجائے گا ، بطورِ ترغیب غصہ پینے کی فضیلت ملاحظہ کیجئے : چنانچہ

غُصّہ پینے والے کیلئے جنتی حُور

        رسولِ بے مثال،  بی بی آمِنہ کے لال صلَّی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّم کا فرمانِ بشارت نشان ہے: جس نے غُصّے کو ضبط کرلیا حالانکہ وہ اسے نافذکرنے پر قادر تھا تو اللہعَزَّوَجَلَّ بروزِقِیامت اُس کو تمام مخلوق کے سامنے بلائے گااور اِختیار دے گا کہ جس حُور کو چاہے لے لے۔  (سنن ابی داوٗد، کتاب الادب،  باب من کظم غیظاً، ۴ / ۳۲۵ ، ۳۲۶، الحدیث ۴۷۷۷ )

حُسنِ اَخلاق اور نرمی دو

دُور ہو خُوئے اِشتِعال ([1])  آقا

 (وسائل بخشش ص ۳۵۹)

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !                                   صلَّی اللہُ تعالٰی علٰی محمَّد

(دوسرا سبب)        بدگُمانی

          کسی کے بارے میں بدگمانی کرنے سے بھی کینہ پیدا ہونا ممکن ہے تِلمیذِ صدر الشریعہ حضرت علامہ عبدالمصطفیٰ اعظمی علیہ رحمۃُ اللہِ القوی اسلامی بہنوں کو نصیحت کے مَدَنی پھول دیتے ہوئے ارشاد فرماتے ہیں : ’’ گھر کے اندر ساس، نندیں یا جیٹھانی، دیورانی یا کوئی دوسری عورتیں آپس میں چپکے چپکے باتیں کررہی ہوں تو عورت کو چاہیے کہ ایسے وَقْت میں ان کے قریب نہ جائے اور نہ یہ جُستجو کرے کہ وہ آپس میں کیا باتیں کررہی ہیں اور بلاوجہ یہ بدگمانی بھی نہ کرے



[1]     خوئے اشتِعال یعنی غصے کی عادت، (غصے کے بارے میں مزید تفصیل جاننے کے لئے شیخِ طریقت امیرِ اہلسنّت دامت برکاتہم العالیہ کے رسالے ’’غصے کا علاج‘‘(مطبوعہ مکتبۃ المدینہ)کا ضرور مطالعہ کیجئے ۔)



Total Pages: 30

Go To