Book Name:Rehnuma e Mudarriseen

             تسہیل کے معنٰی ہیں نرمی کرنا یعنی دوسرے ہمزہ کو نرمی کے ساتھ پڑھنا ۔  یاد رہے کہ قرآنِ پاک میں صرف ایک کلمہ میں تسہیل واجب ہے  ۔ مُدَرِّس کو چائیے کہ اس کلمے کو ادا کرتے ہوئے دوسرے ہمزہ کو نرم کرکے اس طرح پڑھائے کہ نہ وہ پورا ہمزہ رہے اور نہ الف بنے بلکہ دونوں کے درمیان درمیان ہوجائے  ۔ بعض مدنی منّے دوسرے ہمزہ کو سختی سے ادا کرتے ہیں اس سے پرہیز کروائیے  ۔

اِِمَالہ :

            ’’ زَبر‘‘ کو’’ زِیر‘‘ کی طرف ’’الف‘‘ کو’’ یا‘‘ کی طرف مائل کرکے پڑھنے کو اِمالہ کہتے ہیں ۔ امالہ کی ’’ر‘‘ کو اُردو کے لفظ قطر ے کی ’’ر‘‘ کی طرح پڑھیں یعنی ری نہیں بلکہ رے پڑھیں  ۔ اِمالہ کے ہجے اس طرح کروائیے میم جیم زبر مَجْ ، را امالہ والی  رِ ے = مَجْرِ ے ، ھا الف زبر ھا =  مَجْرٖھَا ۔

 امتحان کی ترکیب  :

            مذکورہ بالا ہدایات کے مطابق اس سبق کو پڑھاتے ہوئے امتحان کی ترکیب اس طرح  بنائیے کہمدنی منّے سے مختلف کلمات پر اُنگلی رکھواکر قواعِد کا امتحان لیجئے کہ اس کو قواعِد کی پہچان ہوگئی ہے یا نہیں ؟اور ان کلمات کی دُرُست ادائیگی کر رہاہے یا نہیں ؟

مَدَنی التجا :  اگراس سبق میں کوئی کمزوری دیکھیں تو لازِمی دُور فرمائیے  ۔

 

 

 



Total Pages: 39

Go To