Book Name:Rehnuma e Mudarriseen

 

طریقۂ تَدْرِیس

ترتیب : اس سبق کی ابتدا میں نون ساکِن اور تنوین کے بعدادغا م یرملون کی مثالیں دی گئی ہیں ۔ نون ساکِن اور تنوین کے ردّو بدل سے اِقلاب کی مثالیں بھی دی گئی ہیں تاکہمدنی منّے  کی پہچان اور ادائیگی پُختہ ہو سکے ۔

قواعِد سمجھانااورسبق پڑھانا :

            اِدغام :  مُدَرِّس کو چاہیے کہ مدنی منّے کو سمجھائے کہ ایک حَرْف کو دوسرے حَرْف سے ملا کر پڑھنے کو اِدغام کہتے ہیں ۔ ٭اس کے بعد مدنی منّے کو بتایئے کہ نون ساکِن یا تنوین کے بعد حُرُوفِ یرملون میں سے کوئی حَرْف دوسرے کلمے کے شروع میں آجائے تو اِدغامِ یرملون ہوگا ۔  ٭ی  ،  ن  ،  م  ،  و  آنے کی صورت میں نون ساکِن اور تنوین میں غنہ ہوگا جبکہ ’’ل‘‘ اور’’ر‘‘ آنے کی صورت میں نون ساکِن اور تنوین میں غنہ نہیں ہوگا ۔  ٭ حُرُوفِ یرملون چھ ہیں :

ی                             ر                         م                            ل                              و          ن

            اقلاب :  مُدَرِّس مدنی منّے کو سمجھائے کہ٭  نون ساکِن یا تنوین کے بعد حَرْف  ’’ب ‘‘ آجائے تو نون ساکِن اور تنوین کو میم سے بدل کر اِخفاء کریں گے ۔ اس کو اِقلاب کہتے ہیں ۔

            ٭اس سبق میں بھی مدر س مدنی منّے کو اِدغام اور اقلاب کے قواعِد زبانی یاد کروائے ۔  ٭اِدغام کے ہجے اس طرح کروائیے :   مَنْ یَّقُوْلُ میم نون یا زبر  مَنْ یّ ،  یا زبر  یَ = مَنْ یَّ ، قاف وآؤ پیش قُوْ = مَنْ یَّقُوْ،  لام پیش لُ =مَنْ یَّقُوْلُ ۔ ٭اقلاب کے ہجے اس طرح کروائیے :    مِنْ بَعْدِ میم نون زیر   مِنْ ، با عین زبر   بَعْ=  مِنْ بَعْ ، دال زیر دِ = مِنْ بَعْدِ ۔ ٭اس سبق کو ہجے کروانے کے ساتھ ساتھ رواں بھی ضرور پڑھائیے کیونکہ ہجے کی غرض رواں پڑھنے کی استعداد پیدا کرنا ہے ۔ لہٰذا مُدَرِّس کو چاہیے کہ رواں اس طرح پڑھائے جیسے کوئی مسلسل عبارت پڑھا رہے ہوں ۔  ٭ اس سبق کو رواں اتنی بار سنیں کہ مدنی منّے  کی زبان پر اِدغام اور اقلاب کی مشق رواں دواں ہو جائے ۔

امتحان کی ترکیب  : دی گئی ہدایات کے مطابق اس سبق کو پڑھاتے ہوئے امتحان کی ترکیب اس طرح بنائیے کہ مدنی منّے سے نیچے سے اوپر  "  "  ،  اوپر سے نیچے  "   " ، دائیں سے بائیں " "  اور بائیں سے دائیں " " سنیں نیز مختلف کلمات پر اُنگلی رکھ کراِدغام اور اقلاب کی پہچان کی جانچ کیجئے نیز اس بات کا بھی خیال رکھیے کہمدنی منّا تمام قواعِد کی ادائیگی دُرُست کر رہا ہے کہ نہیں ؟

مدنی منّے سے اِدغام و اقلاب کے ہجے بھی سنیں کہ مدنی منّا ہجے دُرُست کر رہا ہے یا نہیں ؟

مَدَ نی التجا : اگر اس سبق میں مدنی منّے کی کوئی کمزوری نظرآئے تو اُسے سابقہ اسباق کی مدد سے لازِمی دُرُست فرمائیے ۔  

٭٭٭٭٭٭

 



Total Pages: 39

Go To