Book Name:Qoot ul Quloob Jild 1

اِلَّاۤ اَنَا الْمَلِكُ الْقُدُّوْسُ،   اِنِّیْۤ اَنَا اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنَا السَّلَامُ الْمُؤْمِنُ الْمُہَیْمِنُ،   اِنِّیْۤ اَنَا اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنَا الْعَزِیْزُ الْجَبَّارُ الْمُتَكَبِّرُ،   اِنِّیْۤ اَنَا اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنَا الْخَالِقُ الْبَارِیُٔ،   اِنِّیْۤ اَنَا اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنَا الْاَحَدُ الْمُصَوِّرُ،   اِنِّیْۤ اَنَا اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنَا الْكَبِیْرُ الْمُتَعَالُ،   اِنِّیْۤ اَنَا اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنَا الْمُقْتَدِرُ الْقَہَّارُ،   اِنِّیْۤ اَنَا اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنَا الْحَكِیْمُ الْكَبِیْرُ،   اِنِّیْۤ اَنَا اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنَا الْقَادِرُ الرَّزَّاقُ،   اِنِّیْۤ اَنَا اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنَا اَھْلُ الثَّنَآءِ وَالْمَجْدِ،   اِنِّیْۤ اَنَا اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنَا اَعْلَمُ السِرَّ وَاَخْفِیْ،   اِنِّیْۤ اَنَا اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنَا فَوْقَ الْخَلْقِ وَالْخَلِیْقَۃِ،   اِنِّیْۤ اَنَا اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنَا الْجَبَّارُ الْمُتَكَبِّرُ)  

ضروری وضاحت:

            ان کلمات سے  دعا مانگنے والے کو چاہئے کہ وہ متکلم کے بجائے حاضر کی ضمائر استعمال کرے یعنی:(اِنِّیْۤ اَنَا اللّٰہُ)  کے بجائے  (اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ)  اور  (اِلَّاۤ اَنَا)  کے بجائے  (اِلَّاۤ اَنْتَ)  کہے۔  یعنی مذکورہ دعا اس طرح پڑھے:  (اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ رَبُّ الْعالمیْنَ،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ الْحَیُّ الْقَیُّوْمُ،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ الْعَلِیُّ الْعَظِیْمُ،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ الْعَفُوُّ الْغَفُوْرُ،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ مُبْدِیُٔ كُلِّ شَیْئٍ وَّاِلَیْكَ یَعُوْدُ،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ لَمْ تَلِدْ وَلَمْ تُوْلَدْ،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ الْعَزِیْزُ الْحَكِیْمُ،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ مَالِكُ یَوْمِ الدِّیْنِ،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ الرَّحْمٰنُ الرَّحِیْمُ،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ خَالِقُ الْخَیْرِ وَالشَّرِّ،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ خَالِقُ الْجَنَّۃِ وَالنَّارِ،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ الَّذِیْ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ الْوَاحِدُ الْاَحَدُ الْفَرْدُ الصَّمَدُ الَّذِیْ لَمْ یَتَّخِذْ صَاحِبَۃً وَّلَا وَلَدًا،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ الْفَرْدُ الْوَتْرُ،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ عالم الْغَیْبِ وَالشَّہَادَۃِ،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ الْمَلِكُ الْقُدُّوْسُ،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ السَّلَامُ الْمُؤْمِنُ الْمُہَیْمِنُ،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ الْعَزِیْزُ الْجَبَّارُ الْمُتَكَبِّرُ،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ الْخَالِقُ الْبَارِیُٔ،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ الْاَحَدُ الْمُصَوِّرُ،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ الْكَبِیْرُ الْمُتَعَالُ،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ الْمُقْتَدِرُ الْقَہَّارُ،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ الْحَكِیْمُ الْكَبِیْرُ،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ الْقَادِرُ الرَّزَّاقُ،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ  لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ اَھْلُ الثَّنَآءِ وَالْمَجْدِ،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ تَعْلَمُ السِرَّ وَتَخْفِیْ،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ فَوْقَ الْخَلْقِ وَالْخَلِیْقَۃِ،   اِنَّكَ اَنْتَ اللّٰہُ لَاۤ اِلٰـہَ اِلَّاۤ اَنْتَ الْجَبَّارُ الْمُتَكَبِّرُ)

تر جمعہ : بیشک تو ہی معبود ہے،   تمام جہانوں   کا پالنہار ہے۔ بیشک تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   تو آپ زندہ،   دوسروں   کو قائم رکھنے والا ہے،   بیشک تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   تو ہی بزرگ و برتر ہے،   بیشک تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   تو ہی معاف فرمانے والا،   بہت بخشنے والا ہے۔ بیشک تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   ہر شے کا آغاز فرمانے والا ہے اور ہر شے کو تیری ہی جانب لوٹنا ہے۔ بیشک تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   نہ تو تُونے کسی کو جنا اور نہ ہی کسی سے  جنا گیا ہے۔ بیشک تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   غالب حکمت والا ہے۔ بیشک تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   روزِ جزا کا مالک ہے۔ بیشک تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   تو ہی رحمن ورحیم ہے۔ بیشک تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   تو ہی خیر و شر کا پیدا کرنے والا ہے۔ بیشک تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   تو ہی جنت و دوزخ کا پیدا کرنے والا ہے۔ بیشک تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   تو واحدو یکتاو تنہا ہے،   تو بے نیاز ہے،   تونے کوئی بیوی بنائی نہ ہی کوئی بیٹا۔ بیشک تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   تو اکیلا و طاق ہے۔ بیشک تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   تو عالم الغیب و الشہادۃ ہے۔ بیشک تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   تو بادشاہ وقدوس ہے۔ بیشک تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   تو ہی سلامت رکھنے والا،   امن دینے والا،   نگہبان ہے۔ بیشک تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   تو ہی عزت والا،   عظمت والا،   تکبر والا ہے۔ بیشک تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   تو ہی بنانے والا،   پیدا کرنے والا ہے۔ بیشک تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   تو یکتا اور ہر ایک کو صورت دینے والا ہے۔ بیشک تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   تو ہی سب سے  بڑا،   سب سے  بلند ہے۔ بیشک تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   تو ہی عظیم قدرت والا سب سے  زیادہ طاقتور ہے۔ بیشک تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   تو ہی دانا و سب سے  بڑا ہے۔ بیشک تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   تو ہی قدرت والا،   رزق دینے والا ہے۔ بیشک تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   تو ہی حمد و ستائش اور بزرگی کے لائق ہے۔ بیشک تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   تو جانتا ہے مخفی اور مخفی ترین کو۔ تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   تو مخلوق سے  بر تر و بلند ہے۔ تو ہی معبود ہے،   تیرے سوا کوئی معبود نہیں  ،   تو ہی جبار و متکبر ہے۔

            اس کے بعد یہ پڑھ کر دعا ختم کر دے:

 (فَسُبْحَانَ اللّٰہِ رَبِّ الْعَرْشِ الْعَظِیْمِ)   تر جمعہ : پس عرشِ عظیم کا مالک اللہ عَزَّ وَجَلَّ  پاک ہے۔

فائدہ و ثواب: 

            جو شخص مذکورہ اسمائے مبارکہ کے ساتھ دعا کرے اسے  ایسے  شکر گزار،   سجدہ کرنے والوں   اور صالحین میں   لکھا جائے گا جو دارِ جلال میں   صاحب جُودو نوال،   رسولِ بے مثال صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم،   حضرت سیِّدُنا ابراہیم،   حضرت سیِّدُنا موسیٰ،   حضرت سیِّدُنا عیسیٰ اور دیگر انبیائے کرام عَلَیْہِمُ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَام کا پڑوسی ہو گا اور اسے  آسمانوں   اور زمینوں   کے تمام عبادت گزاروں   کا ثواب ملے گا۔ ([1])

اختتام: 

 (اَللّٰہُمَّ صَلِّ عَلٰی مُحَمَّدٍ وَّاٰلِ مُحَمَّدٍ صَلَاۃً تَكُوْنُ لَكَ رِضَآءً وَّلِحَقِّہٖ اَدَآءً،   وَاعْطِہِ الْوَسِیْلَۃَ وَالْفَضِیْلَۃَ،  وَابْعَثْہُ الْمَقَامَ الْمَحْمُوْدَ الَّذِیْ وَعَدْتَّہٗ،   وَاجْزِہٖ عَنَّا مَا ھُوَ اَھْلُہٗ،   وَاجْزِہٖ اَفْضَلَ مَا جَازَیْتَ نَبِیا عَنْ اُمَّتِہٖ،   وَاعْطِہِ الشَّرَفَ وَالشَّفَاعَۃَ یَوْمَ الدِّیْنِ۔ اَللّٰہُمَّ صَلِّ عَلٰی مُحَمَّدٍ نَّبِیِّ الرَّحْمَۃِ وَسَیِّدِ الْاُمَّۃِ وَعَلٰی جَمِیْعِ اِخْوَانِہِ النَّبِیِّیْنَ وَصَلِّ عَلٰۤی اَبِیْنَا اٰدَمَ وَاُمِّنَا حَوَّآءَ وَمَنْ وُّلِدَا بَیْنَہُمَا مِنَ الصَّالِحِیْنَ وَالْمُسْلِمِیْنَ،   وَصَلِّ عَلٰی مَلٰٓـئِكَتِكَ اَجْمَعِیْنَ مِنْ اَھْلِ السَّمٰوَاتِ وَالْاَرْضِیْنَ،   وَصَلِّ عَلَیْنَا مَعَہُمْ بِرَحْمَتِكَ یاۤ اَرْحَمَ الرَّاحِمِیْنَ! وَاغْفِرْ لِیْ وَلِوَالِدَیَّ وَمَا تَوَالَدَا،   وَارْحَمْہُمَا كَمَا رَبَّیٰنِیْ صَغِیْرًا،   وَاغْفِرْ لِلْمُؤْمِنِیْنَ وَالْمُؤْمِنَاتِ وَالْمُسْلِمِیْنَ وَالْمُسْلِمَاتِ اَ لْاَحْیاءِ مِنْہُمْ وَالْاَمْوَاتِ،   رَبِّ اغْفِرْ وَارْحَمْ وَتَجَاوَزْ عَمَّا تَعْلَمُ،   وَاَنْتَ الْاَعَزُّ الْاَكْرَمُ،   وَاَنْتَ خَیْرُ الرَّاحِمِیْنَ وَخَیْرُ الْغَافِرِیْنَ،   وَاِنَّا لِلّٰہِ وَاِنَّاۤ اِلَیْہِ رٰجِعُوْنَ،   وَلَا حَوْلَ وَلَا قُوَّۃَ اِلَّا بِاللّٰہِ الْعَلِیِّ الْعَظِیْمِ،   وَحَسْبُنَا اللّٰہُ وَنِعْمَ الْوَكِیْلُ،   وَحَسْبُنَا اللّٰہُ وَحْدَہٗ لَا شَرِیْكَ لَہٗ )

 تر جمعہ : اے اللہ عَزَّ وَجَلَّ  ! حضرت سیِّدُنا محمد صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم پر اور ان کی آل پر ایسا درود بھیج جو نہ صرف تیری رضا کا باعث ہو بلکہ ان کا حق بھی ادا ہو جائے اور انہیں   وسیلہ اور فضیلت عطا فرما اور انہیں   اس مقامِ محمود پر فائز فرما جس کا تونے ان سے  وعدہ فرمایا ہے اور انہیں   ہماری جانب سے  ایسی جزاعطا فرما جو ان کے شایانِ شان ہو اور انہیں   ہر اس جزا سے  افضل جزا عطا فرما جو تونے کسی نبی کو اس کی امت کی طرف سے  عطا فرمائی ہے اور روزِ قیامت انہیں   شرف و شفاعت عطا فرما۔ اے اللہ عَزَّ وَجَلَّ  ! نَبِیُّ الرَّحْمَۃِ،   سَیِّدُ الاُمَّۃِ حضرت سیِّدُنا محمد صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم پر اور تمام انبیائے کرام عَلَیْہِمُ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَام پر درود بھیج اور ہمارے باپ حضرت سیِّدُنا آدم اور ہماری ماں   حضرت سیِّدَتُنا حوا عَلَیْہِمَا الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَام پر اور ان سے  پیدا ہونے والے ہر نیک اور مسلمان پر رحم فرما اور اپنی رحمت کے صد قے آ سمانوں   اور زمینوں   کے تمام فرشتوں   پر اور ان کے ساتھ ہم پر بھی رحم فرما،   اے سب سے  زیادہ رحم فرمانے والے! اور میری اور میرے والدین کی اور ان کی تمام اولاد کی مغفرت فرما اور ان دونوں   پر رحم فرما جیسا کہ انہوں  نے بچپن میں   



[1]     اتحاف السادة المتقين، کتاب الاذکار، دعاء علی بن ابی طالب، ج۵، ص۳۱۴ حلية الاولياء، الرقم ۲۵۰  وهب بن منبه، الحديث: ۴۶۷۳، ج۴، ص۳۷  مفهوماً



Total Pages: 332

Go To