Book Name:Nisab-ul-Mantiq

۲ ۔ جنس سافل :

            ’’وَھُوَ مَالاَیَکُوْنُ تَحْتَہٗ جِنْسٌ وَیَکُوْنُ فَوْقَہٗ جِنْسٌ ‘‘یعنی وہ جنس جس کے نیچے تو کوئی جنس نہ پائی جائے جبکہ اس کے اوپر جنس پائی جائے ۔ جیسے :  حیوان ۔

فائدہ :

            جنسِ سافل کے تحت نوع پائی جاتی ہے جنس نہیں جیسے :  حیوان کے تحت انسان  ۔

۳ ۔ جنس متوسط :  ۔

            ’’وَھُوَ مَایَکُوْنُ تَحْتَہٗ وَفَوْقَہٗ جِنْسٌ‘‘یعنی وہ جنس جس کے اوپر بھی جنس ہواور نیچے بھی ۔  جیسے :  جسم نامی  ۔

۴ ۔  جنس مفرد :

            ’’ھُوَ مَالاَ یَکُوْنُ تَحْتَہٗ جِنْسٌ وَلاَ فَوْقَہٗ أَیْضًا‘‘یعنی وہ جنس جس کے اوپر نیچے کوئی جنس نہ ہو جیسے :  عقل جبکہ جوہر کو اس کی جنس نہ مانا جائے ۔

٭٭٭٭٭

 

مشق

سوال نمبر1 :  ۔ کلی ذاتی کی تعریف اور اس کی اقسام تفصیلاذکرکریں  ۔

سوال نمبر2 :  ۔ جنس کی اقسام بمع امثلہ تفصیلا لکھیں  ۔

سوال نمبر3 :  ۔ جنس عالی، جنس سافل ، جنس متوسط اور جنس مفرد کی وضاحت کریں  ۔

سوال نمبر4 :  ۔ درج ذیل کلی دوسری کلی کے لئے کلی ذاتی و عرضی کی کون سی قسم ہے ؟

            ناطق ، انسان کے لئے ۔  حیوان ، انسان کیلئے ۔  ناہق، حمار کے لئے ۔  ضاحک ، انسان کے لئے ۔  جسم نامی ، حیوان کے لئے ۔  ماشی ، فرس کے لئے ۔  جسم ، حجر کے لئے ۔  صاہل فرس کے لئے ۔   

٭…٭…٭…٭

٭4  فرامینِ امیر اہلسنت دَامَتْ بَرَکَاتُہُمُ الْعَالِیَہ٭

1…علماء اہلسنت کی برکت سے شجرِ اسلام لہلہا رہاہے ۔

2…عالمِ باعمل مثل چاند ہے اور عالمِ بے عمل مثلِ شمع ہے ۔

3…فرض کا جاننا ہر مسلمان پر فرض عین ہے ۔

4…فرض علوم نہ سیکھنے والا گنہگارہے ۔

سبق نمبر :  22

{…نوع کی اقسام… }

اس کی چار قسمیں ہیں  :

۱ ۔  نوع عالی         ۲ ۔  نوع سافل       ۳ ۔  نوع متوسط      ۴ ۔  نوع مفرد

۱ ۔  نوع عالی :

            ’’ھُوَ مَا یَکُوْنُ تَحْتَہٗ نَوْعٌ وَلاَ یَکُوْنُ فَوْقَہٗ نَوْعٌ‘‘یعنی وہ نوع جس کے نیچے تو نوع پائی جائے لیکن اس کے اوپر کوئی نوع نہ ہو ۔  جیسے :  جسم مطلق ۔

۲ ۔  نوع سافل :

            ’’ھُوَ مَا لاَ یَکُوْنُ تَحْتَہٗ نَوْعٌ وَیَکُوْنُ فَوْقَہٗ نَوْعٌ‘‘یعنی وہ نوع جس کے نیچے کوئی نوع نہ ہو لیکن اس کے اوپر نوع ہو  ۔

فائدہ :

            نوعِ سافل کو نوعُ الانواع بھی کہا جاتاہے کیونکہ یہ نوع تمام انواع سے اخص ہے ۔  جیسے :  انسان ۔

۳ ۔  نوع متوسط :

            ’’ھُوَ مَایَکُوْنُ تَحْتَہٗ نَوْعٌ وَفَوْقَہٗ نَوْعٌ‘‘یعنی وہ نوع جس کے اوپر بھی نوع ہو اور نیچے بھی ۔ جیسے :  جسم نامی ۔

۴ ۔  نوع مفرد :

            ’’ھُوَ مَالا یَکُوْ نُ تَحْتَہٗ نَوْعٌ وَلاَ فَوْقَہٗ‘‘یعنی وہ نوع جس کے اوپر نیچے کوئی

 



Total Pages: 54

Go To