Book Name:Nisab-ul-Mantiq

            جو دو یادوسے زیادہ اجزاء سے مرکب ہوجیسے :  دیوار کہ یہ کل ہے کیونکہ یہ بہت سارے اجزاء یعنی اینٹوں سے مل کر بنی ہے ۔

فائدہ :

            جن اشیاء پر کلی کا صدق آئے ان کو کلی کی جزئیات اور افراد کہتے ہیں اور جن اشیاء سے مل کر کل بنے ان میں سے ہر ایک کو جز کہتے ہیں ۔

کلی اورکل میں فرق :

            کلی کے ہر فرد پر تو کلی کا اطلاق ہوسکتاہے لیکن کل کے اجزاء پر کل کا اطلاق نہیں ہوسکتا  ۔ جیسے :  انسان ایک کلی ہے اس کے تمام افراد(زید، عمرو، بکر) پر اس کا طلاق ہوسکتا ہے یعنی ان میں سے ہر ایک کو انسان کہہ سکتے ہیں ۔ اوردیوار ایک کل ہے اس کے ہر جز پر اس کا اطلاق نہیں ہوسکتا یعنی ہر اینٹ کو ہم دیوار نہیں کہہ سکتے ۔

٭٭٭٭٭

مشق

سوال نمبر1 :  ۔ مفھوم اور اس کی اقسام کی تعریفات بیان کریں  ۔

سوال نمبر2 :  ۔ جز اور جزئی نیز کل اور کلی کا فرق تحریر کریں  ۔

٭…٭…٭…٭

٭…فرامینِ مصطفٰی صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ …٭

1…شہنشاہ خوش خصال، پیکر حسن وجمال صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کا فرمان عالیشان ہے :  ’’بداخلاقی عمل کو اس طرح بربادکردیتی ہے جیسے سرکہ شہد کو ۔ ‘‘

2…رسول بے مثال، بی بی آمنہ کے لعل صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کافرمان عالیشان ہے :  ’’بداخلاقی براشگون ہے اور تم میں بدترین وہ ہے جس کا اخلاق سب سے برا ہے ۔ ‘‘

(’’جہنم میں لے جانے والے اعمال‘‘، جلداول، ص۲۶۶، مطبوعہ مکتبۃ المدینہ باب المدینہ کراچی)

 

 

سبق نمبر :  17

{…نسبت کی اقسام…}

نسبت کی چار قسمیں ہیں  :

۱ ۔  نسبتِ تساوی     ۲ ۔  نسبتِ تباین

۳ ۔  نسبتِ عموم خصوص مطلق    ۴ ۔  نسبتِ عموم خصوص من وجہ

۱ ۔ نسبت تساوی :

            وہ نسبت جو ایسی دو کلیوں کے درمیان پائی جائے کہ ان میں سے ہر ایک دوسری کلی کے ہرہر فرد پر صادق آئے ۔ جیسے : انسان اور ناطق کے درمیان نسبت  ۔

وضاحت :

            انسان اور ناطق دوایسی کلیاں ہیں کہ ان میں سے ہرایک دوسری کلی کے ہرہرفرد پر صادق آتی ہے جیسے :  ہرانسان ناطق ہے اورہر ناطق ، ضاحک ہے  ۔

۲ ۔  نسبت تباین :

            وہ نسبت جو ایسی دوکلیوں کے درمیان پائی جائے کہ ان میں سے کوئی کلی بھی دوسری کلی کے کسی فرد پر صادق نہ آئے جیسے :  انسان اورپتھر  ۔

وضاحت :

            انسان اور پتھر دوایسی کلیاں ہیں کہ ان میں سے کوئی ایک بھی دوسری کلی کے کسی فرد پر صادق نہیں آتی کیونکہ کوئی بھی انسان پتھر نہیں اور اسی طرح کوئی بھی پتھر انسان نہیں لہذا ان دونوں کے درمیان نسبت تباین ہے ۔  

۳ ۔  نسبت عموم خصوص مطلق :

            وہ نسبت جو ایسی دوکلیوں کے درمیان پائی جائے کہ ان میں سے ایک کلی تو دوسری کلی کے ہر ہر فرد پر صادق آئے لیکن دوسری کلی پہلے کے ہرہر فرد پر صادق نہ آئے بلکہ بعض پر صادق آئے ۔ جیسے :  ولی ، اورعالم کے درمیان نسبت  ۔

وضاحت :

            ولی اور عالم دوایسی کلیاں ہیں کہ ان میں ایک تودوسری کلی کے ہرہر فرد پرصادق آتی ہے لیکن دوسری کلی پہلی کلی کے ہر ہر فرد پرصادق نہیں آتی  ۔ جیسے :  ہر ولی عالم ہے یعنی تمام اولیاء عالم ضرورہونگے ۔ لیکن ہر ہر عالم ولی بھی ہو ایسا نہیں بلکہ بعض عالم ولی ہوتے ہیں اور بعض عالم ولی نہیں ہوتے ۔  

 



Total Pages: 54

Go To