تعارف امیر اہلسنت

اس کی حسنِ نیت کا یہ ثمر ہے کہ یہ تحریک بڑی تیزی کے ساتھ ہر حلقہ اور طبقہ اورملک کے ہر حصہ میں پھیلتی جارہی ہے ۔ خاص کر نوجوان طبقہ اس کی طرف بھاگا چلا آرہا ہے۔ ‘‘

          حضرت علامہ مولانا مفتی محمد اعظم رضوی مدظلہ العالی(دارالعلوم مظہر الاسلام بریلی شریف ) اپنے ایک طویل مکتوب میں لکھتے ہیں :’’جب کوئی شخص یاجماعت کسی اچھے کام کے لیے پوری کوشش کرتاہے پروردگارِعالم عزوجل کا وعدہ ہے کہ وہ اس کوکامیابی کی منزل اورمطلوب تک ضرورپہنچاتاہے،قال اللہ تعالیٰ ’’وَالَّذِیْنَ جَاھَدُوْا فِیْنَا لَنَھْدِیَنَّھُمْ سُبُلَنَاط وَاِنَّ اللہَ لَمَعَ الْمُحْسِنِیْنَ‘‘۲۱،العنکبوت)(ترجمۂ کنزالایمان:اور جنہوں نے ہماری راہ میں کوشش کی ضرور ہم انہیں اپنے راستے دکھا دیں گے اور بے شک اللہ نیکوں کے ساتھ ہے ۔)

          امیرِدعوت اسلامی مولانامحمدالیاس صاحب اعلیٰ حضرت رضی اللہ تعالیٰ عنہ کے خلیفۂ خاص حضرت مولاناضیاء الدین صاحب مدنی رحمۃاللہ تعالیٰ علیہ کے مریداوران کے شہزادے حضرت مولانافضل الرحمن صاحب کے خلیفہ ہیں۔اعلیٰ حضرت رضی اللہ تعالیٰ عنہ کے شیدائی و فدائی مسلک اعلٰحضرت رضی اللہ تعالیٰ عنہ کے متصلب مبلغِ اہلسنت ہیں۔دعوت اسلامی کے تبلیغی اجتماعات میں اعلیٰ حضرت رضی اللہ تعالیٰ عنہ کاترجمۂ قرآن کنزالایمان اوران کے سلام یاکلام کاذکرلازماََہوتارہتاہے اورامیرِدعوت اسلامی کی مصنفات یامؤلفات تواعلیٰ حضرت رضی اللہ تعالیٰ عنہ کے فتاویٰ رضویہ وغیرھاسے ماخوذبھی ہیں۔

 


 

 

Index